پاکستانتازہ ترین

سپریم کورٹ میں نیٹو کنٹینرز کیس کی سماعت

اسلام آباد(بیورو رپورٹ)سپریم کورٹ میں نیٹو کنٹینرز کیس کی سماعت ہوئی جس کے دوران جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دیئے کہ نیٹو کنٹینرز اسکینڈل میں قومی خزانے کو 59 ارب روپے کا نقصان پہنچایا گیا ، کیا اب تک 59 روپے بھی وصول کیے گئے ہیں؟ ایف بی آر کے وکیل نے کہا انشاء اللہ یہ رقم آ جائے گی، جس پر چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ انشاء اللہ 2020 میں ہی آئے گی۔ چیف جسٹس افتخار محمد چودھری کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے نیٹو کنٹینرز عمل درآمد کیس کی سماعت کی۔ نیب کے وکیل نے استدعا کی کہ عملدرآمد کے لیے دو ماہ کا وقت دیا جائے۔ جسٹس جواد ایس خواجہ کا کہنا تھا کہ دو برس گزرنے کے باوجود کوئی پیش رفت نہیں ہوئی، چیف جسٹس نے نیب اور ایف بی آر حکام کوآئندہ سماعت تک عملدرآمد بارے پیش رفت سے آگاہ کرنے کی ہدایت کی۔ مزید سماعت 16 اکتوبرکو کی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں  حکومت پاکستان نے یکم مئی کوچھٹی کانوٹیفکیشن جاری کردیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker