تازہ ترینعلاقائی

سنجھورو:نیشنل بینک برانچ سیاسی جماعت کی سرگرمیوں کامرکزبن گئی

سنجھورو(نامہ نگار) نیشنل بینک سنجھورو برانچ سیاسی جماعت کی سرگرمیوں کا مرکز بن گئی،مینیجر کی جانب سے سیاسی جلسہ میں شرکت کے بینرز آویزاں،کسٹمرز دربدر ہوگئے۔
تفصیلات: نیشنل بینک سنجھورو کے مینیجر محمود عالم سدھو کی جانب سے مسلم لیگ (فنکشنل) اور دیگر قوم پرست جماعتوں کی جانب سے 14 دسمبر کو بلدیاتی نظام کے خلاف حیدرآباد میں ہونے والے جلسے کے سلسلے میں سانگھڑ ،سنجھورو اور دیگر شہروں میں عوامی مقامات پر جلسے میں شرکت کی اپیل کے بڑے بڑے بینرز اور پینافلیکس بورڈ آویزاں کر دئیے گئے ہیں۔اس تشہیری مہم کے لئے نیشنل بینک کا عملہ اپنی سرکاری ذمہ داریاں چھوڑ کر دن رات مصروف عمل ہے۔عملہ کی ان غیر قانونی مصروفیات کی وجہ سے نیشنل بینک سنجھورو میں بینک کی معمول کی سرگرمیاں شدید متاثر ہورہی ہیں۔ تنخواہ دار طبقہ اور دیگر اکاؤنٹ ہولڈرز کاؤنٹرز خالی ہونے کے باعث سخت پریشانی کا سامنا کرنے پر مجبور ہوگئے ہیں۔اس سلسلے میں بینک کے عملہ سے جب صحافیوں نے معلوم کیا تو اسٹاف کا کہنا تھا کہ ’’ باس کا حکم ہے‘‘۔ نیشنل بینک سنجھورو کے مین گیٹ کوبینک ٹائم سے دو گھنٹہ قبل ہی تالا لگادیا جاتا ہے اور کسٹمرز کے داخلہ پر پابندی ہے۔نیشنل بینک کے عملہ نے یوٹیلیٹی بلز جمع کرانے کے لئے آنے والے عوام کے ساتھ تضہیک آمیز رویہ ا ختیار کررکھاہے۔جبکہ نیشنل بینک میں نئے اکاؤنٹ کھلوانے کے لئے بینک مینیجرز کی جانب سے ہفتوں چکر لگوائے جاتے ہیں اور مختلف بہانے پیش کر کے عوام کو پریشان کیا جاتا ہے۔تنخواہ دار طبقہ کی بینک عملہ کے ساتھ تلخ کلامی روز کا معمول بن چکی ہے۔سرکاری ملازمین کا کہنا ہے کہ بینک نے رشوت کے حصول کے لئے ایجنٹ مقرر کر رکھے ہیں جو تنخواہ کے چیک پر دو سو روپئے رشوت لیکر ہاتھوں ہاتھ چیک پاس کراتے ہیں جبکہ رشوت نہ دینے والوں کو گھنٹوں لائن میں کھڑا رہنا پڑتا ہے جبکہ بینک مینیجر کو سیاسی اجلاسوں سے فرصت نہیں ہے۔سنجھورو کے سماجی و عوامی حلقوں نے گورنر اسٹیٹ بینک آف پاکستان، نیشنل بینک آف پاکستان کے چیئرمین اور دیگر اعلیٰ حکام سے پر زور اپیل کی ہے کہ سنجھورو کی نیشنل بینک کے کرپٹ افسران کے خلاف کاروائی کی جائے اور مذکورہ بینک برانچ میں نظم و ضبط قائم کیا جائے

یہ بھی پڑھیں  اوکاڑہ: محمد شفیق بھٹی کے استعفیٰ کے باعث ڈاکٹر اعجاز انجم کھوکھر قائم مقام جنرل سیکرٹری سٹی پریس کلب (رجسٹرڈ) نا مزد

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker