تازہ ترینعلاقائی

ٹیکسلا:مافیا نے بیواوں اوت یتیم لوگوں کی ملکیتی اراضی پر قبضہ کر رکھا ہے ،سردارحسن علی

ٹیکسلا (ڈاکٹر سید صابر علی/ نا مہ نگار)ممتاز سماجی و سیاسی شخصیت سردار حسن علی شاہ نے کہا ہے کہ ایچ آئی ٹی کے حساس علاقہ مارگلہ کرش پلانٹ کے ارد گرد رہائش پذیر غیر قانونی افغان باشندوں کی نقل حرکت علاقہ کے لئے سیکورٹی رسک بنتی جارہی ہے انتظامیہ نے اہم مسلہ پر آنکھیں موند رکھی ہیں،مافیا نے بیواوں اوت یتیم لوگوں کی ملکیتی اراضی پر قبضہ کر رکھا ہے ،میر پور ٹیکسلا سٹوں کرشر پر روز مرہ پتھر اور بجلی کی چوری کا سلسلہ جاری ہے،مالکان حکومت کے پچپن کروڑ روپے سے زائد مقروض ہیں ،ملی بھگت سے غیر قانونی کاروبار کو دوام بخشا جارہا ہے مجرمانہ غفلت کے مرتکب ذمہ داران کے خلاف کاروائی ہونی چاہئے، وفاقی وزیر بجلی و پانی ، محکمہ معدنیات ، محکمہ انہار معاملہ کا فوری نوٹس لے،ان خیالات کا اظہار انھوں نے میڈیا سے گفتگو کے دوران کیا ، سرادر حسن علی شاہ کا کہنا تھا کہ اثر رسوخ کے حامل افراد نے بھاری رشوت کی بندر بانٹ سے محکموں کے منہ بند کر رکھیں ہیں ، محکمہ واپڈہ بھی بہتی گنگا میں ہاتھ دھو رہا ہے،انکا کہنا تھا کہ غیر قانونی کاروبار شیلٹر دینے والے محکموں کے ذمہ داران کے خلاف سخت کاروائی ہونی چاہئے جو سب کچھ نے جانتے بوجھتے حکومت کو کروڑوں روپے ریونیو کی پھکی دے رہے ہیں،غیر قانونی دھندے میں ملوث کرشر مالکان خطاب گل افغانی ، خواجہ جاوید،چوہدری نذر ااور اسکے کارندوں کو قانون کے کٹہرے میں لایا جائے ، اور بیواوں اور یتیموں کی ملکیتی اراضی پر قابض اس مافیا کا کڑا احتساب ہونا چاہئے ،انھوں نے چیئرمین ایچ آئی ٹی ، ڈی جی محکمہ معدنیات اور دیگر اداروں کے ذمہ داران سے اپیل کی ہے کہ قانون کو کھلواڑ بنانے والوں علاقہ میں ماحولیاتی آلودگی کا باعث بننے والوں اور میں جرائم کو فروغ دینے والوں کے خلاف بھرپور کریک ڈاون کیا جائے تاکہ لوگوں کو سکھ کا سانس نصیب ہو ،ایسے افراد کی حساس علاقہ میں رہائش سیکورٹی رسک سے کم نہیں مذکورہ علاقہ میں بھرپور سرچ آپریشن کر کے غیر قانونی رہائش پذیر افراد کے خلاف کاروائی ہونی چاہئے، انکا کہنا تھا کہ کرشر پلانٹ کی لیز عرصہ دراز سے ختم ہوچکی ہے مگر مذکورہ افراد محکموں کی ملی بھگت اور رشوت کے بل بوتے پر مسلسل اپنے غیر قانونی کاروبار کوجاری رکھے ہوئے ہیں،ماہانہ بنیادوں پر واپڈا ، محکمہ معدنیات ، پولیس کو بھاری رشوت کے طور پر ادا کئے جارہے ہیں،جس سے کروڑوں روپے کا نقصان حکومت کا ہورہا ہے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker