تازہ ترینعلاقائی

سیالکوٹ پاسپورٹ آفس انچارج عملہ سمیت میں رشوت لینے اور بے ضابطگیوں میں مصروف

daskaڈسکہ(نامہ نگار)سیالکوٹ پاسپورٹ آفس انچارج عملہ سمیت میں رشوت لینے اور بے ضابطگیوں میں مصروف،صارفین کو مشکلات کا سامنا ،تفصیل کے مطابق سیالکوٹ آفس میں تعینات سپرنٹنڈنٹ محمد سلیم جو کہ سارا دن فارغ رہنے کے علاقہ خواتین پر نظرجمائے ادھر اُدھرآفس رومز میں چکر لگاتارہتا ہے جبکہ سپرنٹنڈنٹ کی جگہ پر محمد حسین ڈیٹا انٹری اپریٹر جو کہ محمد سلیم کا تعلق داراوریہ دونوں ایک ہی علاقہ کے رہائشی ہیں سپرنٹنڈنٹ کی کرسی پر بیٹھ کر فارم کی تصدیق اور پاسپورٹ گو ہیڈ کرتا ہے پاسپورٹ آفس میں رشوت اور ایجنٹ کے بنا کوئی کام نہیں ہوتا جبکہ پاسپورٹ آفس کے انچارج محمد سلیم کے آرڈر پر ڈیٹا انٹری اپریٹر محمد سہیل کی ڈیوٹی ڈلیوری اکائنٹر پر لگی ہوئی ہے جو کہ پیسوں کے حصول کی خاطر لوگوں کی مجبوری کا فائدہ اٹھاتے ہوئے ہر پاسپورٹ کے عوض 100, 200, 500سے 1000تک وصول کرتا ہے رشوت دینے والوں اور جو لوگ ایجنٹ کے ذریعے آئے ہوتے ہیں ان کا کام منٹوں میں ہو جاتا ہے ایجنٹ کی کم سے کم فیس 1000سے 1500 ہے باقی پاسپورٹ بنوانے کی نوعیت جاننے کے بعد وہ اپنی فیس بتاتے ہیں جبکہ غریب اور رشوت دینے سے لاچار لوگوں کو مختلف قسم کے سرٹیفیکٹ کا مطالبہ یا پھر یہ کہ کر ٹال دیا جاتا ہے کہ آپ کا پاسپورٹ کچھ دنوں تک آئے گا اور اس طرح پاسپورٹ بنوانے والے صارفین کو عرصہ دراز سے ذلیل و خوار کیا جا رہا ہے اور سیالکوٹ پاسپورٹ آفس ضلع سیالکوٹ اور ضلع نارووال کا اکلوتا آفس ہے دوردراز آئے لوگ خود بخود رشوت دینے پر مجبور ہو جاتے ہیں پاسپورٹ آفس سٹاف کے ارکان محمد سلیم، محمد حسین، محمد سہیل ، سیکیورٹی اہلکار وغیرہ ایجنٹوں کے ساتھ مل جل کر کام کرنے میں مصروف ہیں پاسپورٹ صارفین نے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ایسے کرپٹ آفیسر و سٹاف کی انکوائری کرتے ہوئے ان کو عہدے سے فارغ کر دیا جائے اور کسی اچھے ایماندار آفیسر کو سیالکوٹ پاسپورٹ آفس میں تعینات کیا جائے ۔

یہ بھی پڑھیں  مشاہد اللہ کے بیان کا ایک پہلو

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker