تازہ ترینعلاقائی

اراضی ریکارڈ سنٹر تحصیل ٹیکسلا میں فرد اور انتقال کا حصول آسان بن گیا

ٹیکسلا(ڈاکٹر سید صابر علی /نا مہ نگار)اراضی ریکارڈ سنٹر تحصیل ٹیکسلا میں فرد اور انتقال کا حصول آسان بن گیا،آن لائن سسٹم کو ناکام بنانے کے لئے لینڈ مافیا اور پٹواری سرگرم ، کہوٹ کی نظر ثانی و رقبوں کے زائد حصے بکے ہوئے ہیں، پٹواری ریکارڈ کی درستگی میں لیت و لعل سے کام لے رہے ہیں،لینڈ ریکارڈ کی تصحیح کے لئے اپ ٹو ڈیہٹ ریکارڈ کی عدم دستیابی سائلین کے لئے وبال جان بنا ہوا ہے،سائلین کی جائز مشکلات کے ازالہ کے لئے تمام ملبہ آن لائن سسٹم کی خرابی پر ڈالا جاتا ہے اراضی ریکارڈ سنٹر تحصیل ٹیکسلا میں تعینات مستعد عملہ انتہائی جانفشانی سے اپنے فرائض منصبی سر انجام دے رہا ہے،اسسٹنٹ ڈائریکٹرسلیم اختر اور کمپوٹر سیکشن کے انچارج شہزاد احمد کے مطابق 52 میں سے 45 موضات کا ریکارڈ آن لائن ہوچکا ہے،جبکہ بیس موضات ایسے ہیں جنہیں تمام تر غلطیوں سے پاک کردیا گیا ہے،اب چونکہ سرکاری فیس کے عوض سائلین کو فرد اور انتقال مل جاتا ہے جبکہ اراضی ریکارڈ سنٹر میں فرد یا انتقال کے حصول کے لئے اراضی کے اصل مالک کو پیش ہونا پڑتا ہے جس سے بالخصوص لینڈ مافیا اور بڑے بڑے زمیندار جو کہ عادی تھے کہ پٹواری کو گھر بلا کر ان سے فرد یا انتقال چڑھواتے تھے سسٹم آن لائن ہونے کے بعد یہ سلسلہ بند ہوگیا ہے جس سے عوام تو بے ھد خوش ہیں مگر پٹواریوں کی لاگ بند ہوگئی ہے ، ادہر سروے کے دوران جب اراضی ریکارڈ سنٹر میں موجود سائلین سے پوچھا گیا کہ آن لائن ہونے سے انھیں کون سی دشواریاں اور مشکلات در پیش آرہی ہیں جس پر موقع پر موجود غازی کوہلی کے ملک عبدالروف ، قاسم شہزاد و دیگر کا کہنا تھا کہ عملہ کو لینڈ مافیا اور دیگر بڑے زمینداروں کی جانب سے ناجائز کام کرنے سے انکار پر انھیں دھمکیاں دی جاتی ہیں ،ملک چوہدری ان پٹواریوں کو گھر بلاکر اپنے کام کرواتے تھے اب یہ سلسلہ بند ہونے کے بعد انکی نیندیں حرام ہوگئی ہیں انکا کہنا تھا کہ عوام کو آن لائن سسٹم سے بہت بڑی سہولت میسر آئی ہے نہ صرف کرپشن کا خاتمہ ہوا ہے بلکہ سائلین کے کام انہتائی مناسب فیس جو کہ سرکاری طور پر لی جاتی ہے میں کام ہوجاتے ہیں تاہم ریکارڈ کی درستگی نہ ہونے کی وجہ سے کام کو پٹواری التو امیں ڈال دیتے ہیں چوکہ بغیر تصدیق کے فرد اور انتقال میں رکاوٹ پیش آتی ہے،قاسم شہزاد کا کہنا تھا کہ آن لائن سسٹم عوام کو بہترین سہولیات مہیا کرنے میں سرگرم ہے ڈیوٹی اوقات کے علاوہ رات گئے عملہ اپنی ڈیوٹی کرتا نظر آتا ہے جس سے عوام کے مسائل میں بتدریج کمی آرہی ہے، تاہم کچھ لوگ عملہ کو بلا وجہ ناجائز کام نہ ہونے پر تنگ کرتے ہیں جن کا سسٹم انہی کاموں سے چلتا ہے، وہ آئے روز لوگوں سے بھاری رقم بطور رشوت لیکر عملہ کو حراساں کرنے میں مصروف نظر آتے ہیں انہی دلالوں کی وجہ سے عوام بشمول عملہ تنگ ہے انھوں نے انتظامیہ کے اعلیٰ افسران سے مطالبہ بھی کیا کہ ایسے افراد جو آن لائن سسٹم کو ناکام کرنے اور ناجائز کاموں پر عملہ کو تنگ کرتے ہیں انکا بھرپور محاسبہ ہونا چاہئے تاکہ عوام پرسکون اپنے معاملات حل کر سکیں اور عملہ بغیر کسی دباو کے اپنا کام سرانجام دے سکے،اراضی ریکارڈ سنٹر میں موجود سائلین کا کہنا تھا کہ انچارج سمیت تمام عملہ انتہائی خوش اخلاق اور کام میں مہارت رکھنے والا ہے ، جس سے عوام نہ صرف خوش ہیں بلکہ چاہتے ہیں کہ یہاں تعینات عملہ جو کہ ڈیوٹی اوقات سے زائد کام کر کے عوام کو سہولیات مہیا کرنے میں سرگرم ہے ان کے جائز حقوق کا تحفظ انتظامیہ کا فرض ہے ،ادہر عملہ کسی بھی شکائت کی صورت میں متعلقہ تحصیل دار کو ریکارڈ درستگی کے لئے بر وقت کہتا ہے مگر دوسری جانب ٹال مٹول سے کام لیاجاتا ہے جس میں عملہ کی نہیں بلکہ متعلقہ تحصیل دار اور پٹواری کی نا اہلی ہوتی ہے ،عوام نے انتظامیہ کے اعلیٰ افسران سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ تمام پٹواریوں اور تحصیل دار سمیت محکمہ مال کے افسران کو اس بات کا پابند کیا جائے کہ آن لائن سسٹم کی فوری درستگی کے لئے تمامتر صحیح ریکارڈ اراضی ریکارڈ سنٹر تحصیل ٹیکسلا کو مہیا کریں تاکہ ریکارڈ میں موجود خامیوں کو فوری طور پر درست کر کے عوام کو ان مسائل سے نجات مل سکے

یہ بھی پڑھیں  پاکستان اسٹیل ملز سمیت مزید 5 قومی اداروں کی نج کاری کا فیصلہ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker