تازہ ترینعلاقائی

ٹیکسلا:ہیوی مکینکل کمپلیکس کا بحران شدت اختیارکرگیا،ورکرزپانچ ماہ سے تنخواہیں نہ ملنے پرملازمین سراپا احتجاج

ٹیکسلا ( ڈاکٹر سید صابر علی / نا مہ نگار)ہیوی مکینکل کمپلیکس ( ایچ ایم سی) کا بحران شدت اختیار کرگیا ، ورکرز کا پانچ ماہ سے تنخواہیں نہ ملنے پرملازمین سراپا احتجاج ،اعلیٰ حکام سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ،تنخواہوں کی عدم ادائیگی غریب ورکرز کے گھروں میں فاقہ کشی کی نوبت آگئی،ادارے کی بحالی کے لئے حکومت امدادی پیکج کا اعلان کرے،مزدوروں کوانکی محنت کا صلہ دینے کی بجائے فاقہ کشی پر مجبور کیا جارہا ہے،تفصیلات کے مطابق ٹیکسلا کا معروف صنعتی ادارہ ایچ ایم سی اس وقت سخت مالی بحران کا شکار ہے جس کی بنا پر یہاں کام کرنے والے سینکڑوں ملازمین کو پانچ ماہ سے تنخواہ نہیں ملی ،جبکہ ادارہ سے ریٹائرڈ ہونے والے ملازمین بھی تاحال پنشن و دیگر واجبات کے منتظر ہیں ، مگر خزانہ خالی ہونے کے باعث کسی بھی ملازم کو پانچ ماہ سے تنخواہ نہ مل سکی،سی بی اے ایمپلائز ایسوسی ایشن، انجینیئرز ایسوسی ایشن،آفیسرز ایسوسی ایشن،ایسوسی ایٹ انجینیئرز ایسوسی ایشن،مشترکہ اعلامیہ جاری کرتے ہوئے حکومت کے اعلیٰ حکام وزیر اعظم پاکستان میاں نواز شریف،وفاقی وزیر پلاننگ کمیشن چوہدری احسن اقبال،ایم این اے حلقہ این اے 53 محترمہ آسیہ ناز تنولی،کوآرڈینیٹر مسلم لیگ ن ملک عمر فاروق،اور ایم ڈی ایچ ایم سی سے اپیل کی ہے کہ ہیوی مکینیکل کمپلیکس ایچ ایم سی پاکستان کے صنعتی اداروں میں ایک بڑا نام ہے،جو نہ صرف اندرون ملک مشینری کا مانگ پوری کرتا ہے ،بلکہ اپنی تیار کردہ مصنوعات برآمد بھی کرتا ہے،ملک کے دفاعی منصوبوں کی تکمیل میں ادارہ کے ہنر مندوں نے انتہائی ان تھک محنت سے کام نہ صرف بر وقت منصوبوں کی تکمیل کی بلکہ متعلقہ دفاعی اداروں نے ہمارے ہند مندوں کی صلاحیتیوں کا اعتراف بھی کیا،اور ایچ ایم سی کو دفاعی ادارہ میں ضم کرنے کا منصوبہ بھی بنایا گیا،تاحال اسکاحتمی فیصلہ نہ ہوسکا،گزشتہ دو سالوں میں ایچ ایم سی کو اسکی پیداوری صلاحیت سے کم آرڈر ملے جس کی بنا پر ادارہ مالی طور پر زیر بار آگیا،اور نوبت یاہں تک آگئی کہ گزشتیہ پانچ ماہ سے ملازمین کو تنخواہ بھی نہ مل سکی،مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا کہ حکومت ملازمین کی تنخواہوں کے لئے خصوصی گرانٹ کا اعلان کرے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
error: Content is Protected!!