پاکستانتازہ ترین

اسلامی نظریاتی کونسل کی تحفظ نسواں بل پرسفارشات تیار

اسلام آباد(بیوروچیف)اسلامی نظریاتی کونسل نے مولانا محمد حسین شیرازی کی زیرِصدارت تحفظِ نسواں بل پر تجاویزات کو آخری شکل دے دی ہے۔تفصیلات کے مطابق اسلامی نظریاتی کونسل کے چئیرمین مولانا محمدخان شیرانی کے زیرِ صدارت اجلاس میں تحفظ نسواں پر کونسل کی تجاویزات کو آخری شکل دے دی گئی ہے ، جسے بعد ازاں اسمبلی میں پیش کر کے منظور کرایا جا سکتا ہے۔کونسل کی جانب سے سفارش کی گئی ہے کہ پرائمری تعلیم کی تکمیل کے بعد مخلوط تعلیم پر پابندی عائد کی جائے،تعلیمی اداروں میں مخلوط محفلوں کے انعقاد کو ناممکن بنایا جائے۔کونسل کی سفارشات کے مطابق خواتین غیر محرم مرد کے ساتھ نہ توکسی غیر ملکی دوروں پرجا سکیں گی، اور نہ ہی غیر ملکی مہمانوں کو خوش آمدید کہنے کے لیے خواتین موجود ہوں گی۔کونسل نے خواتین پر ہونے والے گھریلو تشدد پر تجویز دی ہے کہ شوہر’’تادیب‘‘ کے لیے اپنی بیوی پر ہلکا تشدد کر سکے گا۔کونسل کی مزید سفارشات میں خواتین نرس کی مرد مریض کی تیمارداری پر بھی پابندی عائد کرنے کی تجویز دی ہے، جب کہ نامحرم مرد و عورت کو مخلوط تعلیمی و تفریحی تقریبات میں شرکت بھی ممنوع ہو گی۔یاد رہے اس سے قبل پنجاب حکومت تحفظِ نسواں بل منظور کر چکی ہے، جس میں گھریلو تشدد سے روک تھام کے لیے تشدد کرنے والے شوہروں کو قانونی گرفت میں لا کر سزا دلوانے کی تجویز دی گئی تھی۔

 

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button