تازہ ترینعلاقائی

ڈسٹرکٹ جج اوکاڑہ نے مردہ شخص کو زندہ ظاہر کرکے رجسٹری کرنے پر پٹواری کےخلاف کاروائی کا حکم

okaraاوکاڑہ ( محمد مظہر رشید)ایڈیشنل ڈسٹرکٹ سیشن جج اوکاڑہ نے مردہ شخص کو زندہ ظاہر کرکے رجسٹری کیلئے فرد جاری کرنے پر حلقہ پٹواری سمیت دیگر افراد کےخلاف ڈپٹی ڈائریکٹرانٹی کرپشن اوکاڑہ کو کاروائی کرنے کا حکم دے دیا ایک بیوہ نے مکان پر قبضہ کرنے کی خاطر اپنے مرحوم خاوند کی جگہ کسی اور کو خاوندظاہرکرکے اس کے نام کی فرد حاصل کرلی تھی تفصیلات کے مطابق کرسچین کالونی اوکاڑہ کے رہائشی ےوسف مسیح نے ایڈیشنل سیشن جج اوکاڑہ حسنین قادر گھلو کو درخواست گزاری کہ اس کی بیوہ بھاوج سلمیٰ بی بی نے میرے والد مرحوم کے مکان پر مکمل قبضہ کرنے کی خاطر کچی آبادی کی سروے ٹیم سے اپنے مرحوم خاوند و میرے بھائی ےونس مسیح کے نام کا ڈیمانڈنوٹس جاری کروایا اور اسکی وفات کے ایک سال بعد حلقہ پٹواری کے اسسٹنٹ عبدالخالق سے ساز باز ہوکرمحمد علی نامی شخص کو ےونس مسیح ظاہر کرکے حلقہ پٹواری محمد انور سے فرد برائے رجسٹری حاصل کر لی اور مکان ہتھیانے کیلئے سول عدالت میں پیش کردی جس کا علم ہونے پرےوسف مسیح نے اس کے خلاف ایس ایچ او تھانہ اے ڈویژن اوکاڑہ کو درخواست گزاری جس پر کوئی کاروائی عمل میں نہ لائی گئی ایڈیشنل ڈسٹرکٹ سیشن جج اوکاڑہ کو مارچ 2013کو درخواست گزاری جنہوں نے پولیس تھانہ اے ڈویژن سے رپورٹ طلب کر لی تین ماہ بعد گذشتہ روز ایڈیشنل سیشن جج اوکاڑہ حسنین قادر گھلو نے پولیس رپورٹ اور واقعات کی روشنی میں ڈپٹی ڈائریکٹر انٹی کرپشن اوکاڑہ کو حلقہ پٹواری سمیت تمام ملوث افراد کے خلاف کاروائی کرنے کاحکم سنایا ہے دریں اثناءسول جج اوکاڑہ نے ےوسف مسیح کی درخواست پر عارضی حکم امتناعی جاری کرکے تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن اوکاڑہ کو ےونس مسیح مرحوم کے نام رجسٹری جاری کرنے سے روک دیا ہے اور 15جون کو دونوں فریقین کو طلب کر لیا ہے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button