تازہ ترینعلاقائی

ضلع قصور سے ہزاروں کسان پنجاب اسمبلی کے باہر دس اگست کو احتجاجی مظاہرہ کریں گے

بھائی پھیرو(نامہ نگار)شوگر ملوں کی لوٹ مار،واپڈا بلوں کی بھرمار اور نہری پانی کی غیر منصفانہ تقسیم نے کسانوں کو کنگال بنا دیا ہے۔قبضہ گروپوں نے سرکاری اور غیر سرکاری اربوں کی زمینیں ہڑپ کرکے کئی خاندانوں کو بھیک مانگنے پر مجبور کر رکھا ہے، ۔مطالبات منوانے کیلیے ضلع قصور سے ہزاروں کسان پنجاب اسمبلی کے باہر دس اگست کو احتجاجی مظاہرہ کریں گے۔دھرنا ہوگا مرنا ہوگا ، کسان بورڈ پاکستان ضلع قصور کے صدر رائے محمدافضل کھرل ایڈووکیٹ نے ضلعی زمہ داران جنرل سیکرٹری رانا خالد مسعود خاں،چئر مین رحمت اللہ منہاس،تحصیل پتوکی کے صدر چوہدری ممتاز،جنرل سیکرٹری ملک ممتاز حیدر اور دیگر عہدیداران کے ہمراہ ہنگامی اور پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کیا ۔رائے محمد افضل کھرل نے کہا کہ شوگر ملوں کی لوٹ مار،واپڈا بلوں کی بھرمار اور نہری پانی کی غیر منصفانہ تقسیم نے کسانوں کو کنگال بنا دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ زرعی مداخل بیج ، اور بجلی کی بڑھتی ہوئی قیمتوں سے اجناس کی پیداواری لاگت میں کئی گنا اضافہ ہو چکا ہے اور کاشتکاری گھاٹے کا سودا بن چکا ہے ، ہمارا مطالبہ ہے کہ گندم کی کم از کم قیمت پندرہ سو روپیہ فی من اور گنے کی قیمت دو سو تیس روپے فی من مقرر کی جائے اور بجلی کا مناسب فلیٹ ریٹ مقرر کیا جائے ۔ بجلی کی ہوش ربا قیمتوں نے پوری قوم اور خصوصاً کسانو ں کو کرنٹ لگا دیا ہے ۔ہم نے بار بار گندم اور گنے کی قیمتوں کو بڑھانے کامطالبہ کیا مگر تاجر حکمرانوں نے اپنے چہیتے شوگر مل مالکان اور فلور مل مالکان کو نوازنے کیلیے قیمتوں میں اضافہ کرنے سے انکار کردیااور ہمارے جائز مطالبات کو بھی نہیں مانا ۔شوگرملوں نے ناجائز کٹوتیاں کرکے اور گنے کی ادائیگیاں نہ کرکے کسانوں کو لوٹنے کی انتہا کر رکھی ہے۔واپڈا والے اوور ریڈنگ کرکے اور جی ایس ٹی ڈال کر کسانوں کی چیخیں نکال رہے ہیں۔نہری پانی کی چوری نے ٹیل پر واقع وسیع رقبہ کو بنجر بنا دیا ہے۔ان حالات میں کسانوں کے پاس احتجاج کے سوا کوئی چارہ نہیں ۔دس اگست کو ضلع قصور سے ہزاروں کسان کسان بورڈ پاکستان کے قائم مقام سیکرٹری جنرل ارسلان خاں خاکوانی کی قیادت میں احتجاج کریں گے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker