پاکستانتازہ ترین

ادویات کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگی

لاہور(نیوزڈیسک) دوا سازوں کمپنیوں کی جانب گزشتہ چند ماہ کے دوران ادویات کی قیمتوں میں100 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ کئی ادویات تو غریب مریضوں کی دسترس سے باہر ہوگئیں ہیں۔ان ادویات میں سے زیادہ تر مریضوں کو ڈائیریا، بخار، بد ہضمی، درد، انفکیشن اور دیگر امراض کے لیے تجویز کی جاتی ہیں، البتہ جب سے ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی پاکستان (ڈراپ) نے اس معاملے میں نرمی دکھانی شروع کی ہے، تب سے ادویات کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگی ہیں۔سرکاری دستاویزات اور مارکیٹ ذرائع مریضوں کے لیے ایک خطرناک صورتحال کی نشاندہی کر رہے ہیں، کیونکہ ڈراپ نے جون اور اگست میں سرکاری طور پر ادویات کی قیمتوں میں 4 گنا اضافہ کیا تھا تاہم ادویات تیار کرنے والی کمپنیوں نے قیمتوں میں 5 گنا اضافہ کیاہے ۔دوسری جانب وفاقی اور صوبائی حکومتوں نے دوا ساز کمیپنوں کی جانب سے قیمتوں میں بلاجواز اضافے کا کوئی نوٹس نہیں لیا۔وفاقی وزارت صحت کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت 1976 ڈرگ ایکٹ کی شرائط کی خلاف ورزی پر دوا ساز کمپنیوں کے خلاف کارروائی کرسکتی ہے تاہم عدالت عظمٰی کے فیصلے کے بعد ان دواساز کمپنیوں کے خلاف سخت اقدامات کیے جاسکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں  ڈگری نہیں تعلیم چاہیے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker