پاکستانتازہ ترین

خون کا عطيہ کرنے والوں کا عالمی دن آج منايا جا رہا ہے۔

download کراچی(نمائندہ خصوصی) خون کا عطيہ کرنے والوں کا عالمی دن آج منايا جا رہا ہے۔ یہ دن منانے کا مقصد رضاکارانہ خون عطيہ کرنے والوں سے اظہار تشکر اورعطيہ نہ کرنے والوں ميں شعور اجاگر کرنا ہے۔
لوگ عام طور پر خون اس وقت ديتے ہيں جب کسی عزيز یا رشتے دار کو ضرورت ہو لیکن کسی غير کی جان بچانے کیلئے خون عطيہ کرنے میں لوگ دلچسپی نہيں لیتے۔ برادر اسلامی ملک ایران میں ہر نوجوان اپنی سالگرہ کے دن خون کا عطيہ ديتا ہے۔ پاکستان ميں صرف ايک فيصد لوگ ہی رضاکارانہ خون عطيہ کرتے ہيں۔ طبی ماہرین کہتے ہیں ايک بوتل خون سے تين افراد کی زندگی بچائی جاسکتی ہے۔ اٹھارہ سے ساٹھ سال کا صحت مند شخص ہر تين ماہ بعد خون عطيہ کرسکتا ہے۔ خون عطيہ کرنے والوں کے ريڈ سيل ميں دس فيصد تک اضافہ ہوتا ہے ليکن خون دينے والوں کو معياری بلڈ کلیکشن سينٹرز کو ہی عطیہ دينا چاہئے۔ غير معياری بلڈ بینکس ميں خون دينے سے ايڈز اور ہيپاٹائٹس جيسی بيمارياں پھيل سکتی ہيں۔ پاکستان میں خون کی بتيس لاکھ بوتلوں کی سالانہ ضرورت ہوتی ہے ليکن ہر سال صرف بيس لاکھ ہی خون کی بوتليں جمع ہوپاتی ہيں۔ ماہرين کا کہنا ہے کہ اگر ایران کی طرح پاکستان میں بھی نوجوان اپنی سالگرہ پر خون عطيہ کريں تو روزانہ نو ہزار تين سو خون کی بوتليں جمع ہوسکتی ہيں جو ملک بھر ميں مريضوں کی ضرورت کیلئے کافی ہيں۔

یہ بھی پڑھیں  ریاست جمو ں و کشمیر کی وحد ت پر کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے ، یونا ئیٹڈ کشمیر پیپلز نیشنل پارٹی برطانیہ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker