تازہ ترینعلاقائی

سبی :سکولوں کو کھلے ڈیڑھ ماہ کا عرصہ گزر گیا مگر تا حال طلباء طالبات کو درسی کتب فراہم نہیں کی گئیں

سبی(نمائندہ خصوصی ) تعلیمی ایمر جنسی کا نفاذ لفاظی یا حقیقت بلوچستان کے تاریخی شہر سبی کے سکول کھلے ڈیڑھ ماہ کا عرصہ گزر گیا مگر تا حال طلباء طالبات کو درسی کتب فراہم نہیں کی گئیں طلباء طالبات کا مستقبل کیا ہوگا ایک سوالیہ نشان تفصیلات کیمطابق موسم گرما کی تعطیلات کے بعد سکولوں کو کھلے تقریبا ڈیڑھ ماہ کا عرصہ گزرچکا ہے مگر سکولوں کے انتظامی افسران کی جانب سے تا حال طلباء وطالبات کو مکمل کورس کی درسی کتب تا حال فراہم نہیں کی گئی ہیں جسکی وجہ سے ان کی پڑھائی متاثر ہورہی ہے دوسری جانب اساتذہ اپنی جگہ پریشان ہیں کہ وہ بچوں کو پڑھائیں توکیا پڑھائیں علاوہ ازیں کئی ایک سکولوں کی خستہ حالی اور چار دیواری نہ ہونے کے باعث اساتذہ و طلبا و طالبات ذہنی اذیت میں مبتلا ہیں ایسے حالات میں تعلیمی ایمر جنسی کے مثبت اثرات کیونکر ظاہر ہوسکتے ہیں محکمہ تعلیم کی انتظامیہ کو چاہیے کہ وہ تعلیم دوستی کے مفاد میں سکولوں کے طلباء و طالبات کو مکمل کورس کی درسی کتب جلد فراہم کی جائیں نیز تعلیمی ایمر جنسی کے نفاذ کو کامیاب کرنے کیلئے سکولوں کی خستہ حال عمارات اور چار دیواریوں کی جانب توجہ دینے کو یقینی بنانا ہوگا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
error: Content is Protected!!