تازہ ترینعلاقائی

ٹیکسلا:پی ٹی آئی کے مقامی رہنماوں کے اوپر سٹی چوکی ٹیکسلا میں بد نیتی پر قائم ہونے والے مقدمہ کا ڈراپ سین

ٹیکسلا(ڈاکٹر سید صابر علی سے)پی ٹی آئی کے مقامی رہنماوں کے اوپر سٹی چوکی ٹیکسلا میں بد نیتی پر قائم ہونے والے مقدمہ کا ڈراپ سین، ایڈیشنل سیشن جج ٹیکسلا نے مقدمہ میں نامزد تمام افراد کو بے گناہ قرار دیتے ہوئے کیس سے باعزت بری کردیا،معزز کی جج کی پولیس کو سر زنش ،شرفاء کی پگڑیاں اچھالنے سے باز آئیں،مقدمہ بد نیتی اور جھوٹ پر مبنی تھا عدالت کا فیصلہ حق کی فتح ہے سیاسی بنیادوں پر پی ٹی آئی کے اراکین کو حراساں کیا جارہا ہے پولیس مسلم لیگ ن کی لونڈی بنی ہوئی ہے، عدالتی فیصلہ سے انصاف کا بول بالا ہوا ، سید مہتاب حسین شاہ ، ملک پرویز ، حاجی زاہد رفیق و دیگر کی احاطہ عدالت میں میڈیا سے گفتگو،تفصیلات کے مطابق ڈیڑھ سال قبل ایف اآئی آر نمبر294 جو کہ 21 مارچ 2015 کو سٹی چوکی ٹیکسلا میں درج ہوئی جس میں میں طیب نامی نوجوان کی حوالات میں پولیس تشدد سے پلاکت کی خبر ملی ، جو بعد ازاں غلط ثابت ہوئی جس پر پی ٹی آئی کے اس وقت کے ایم پی اے محمد صدیق خان و دیگر اراکین مقامی رہنما پولیس گردی پر چوکی پہنچ گئے ، اور ظلم کا شکار ہونے والے خاندان کے ساتھ اظہار ہمدردی کیا جس پر پولیس نے پاکستان تحریک انصاف کے اس وقت کے سٹنگ ایم پی اے جو اس وقت وفات پاچکے ہیں کے سمیت 28 افراد اور سو کے قریب نامعلوم افراد کے خلاف زیر دفعات 147/149, 500/186/341/342, کے تحت مقدمہ درج کیا، پولیس کیس کی خود ہی مدعی تھی پولیس کا موقف تھا کہ ان لوگوں نے ہلڑ بازی کی توڑ پھوڑ کی اور وڈ بلاک کر کے پولیس کیس پر اثر انداز ہوئے، یاد رہے کہ اس وقت پی پی سات سے پی ٹی آئی کے منتخب ہونے والے ایم پی اے محمد صدیق خان نے اس بابت پنجاب اسمبلی میں تحریک استحقاق بھی پیش کی تھی جسے استحقاق کمیٹی کے سپرد کیا گیا جس کے بعد قائم ہونے والا خود کشی کا مقدمہ ختم ہوا ، آج بروز جمعرات کو مذکورہ کیس کی سماعت ایڈیشنل سیشن جج ٹیکسلامنظر علی گل کی عدالت میں ہوئی ، ملزمان کی جانب سے ایڈووکیٹ ملک سجاد حسین، سید رفاقت حسین ، الطاف حسین ، وقاص علی نقوی اور پی ٹی آئی لائرز فورم تیکسلا بار کے صدر ایڈووکیٹ ملک اجمل شہزاد پیش ہوئے ، عدالت نے مذکورہ وکلاء کے دلائل سے اتفاق کرتے ہوئے نہ صرف پولیس کی سخت سر زنش کی بلکہ مقدمہ میں نامزد ملزمان جن میں پی ٹی آئی کے مرحوم ایم پی اے محمد صدیق خان، حاجی زاہد رفیق ، ملک ربنواز ، ملک پرویز ، سید مہتاب حسین شاہ و دیگر شامل تھے کو با عزت بری کرنے کے احکامات صادر کئے

یہ بھی پڑھیں  بدین ،گولاڑچی،ٹنڈوباگوکی ساحلی پٹی کے 14 لاکھ سے زیادہ لوگ زیرزمین ،کڑوا ،اورزھریلہ پانی پینےپرمجبور

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker