تازہ ترینعلاقائی

گلگت میں غیرملکی سیاحوں کے قتل کی شدیدمذمت کرتے ہیں ،راؤناصرعلی خان

rao nasirلاہور(پریس ریلیز) سینئرنائب صدرمسلم لیگ ن لیبرونگ لاہور اور ممتاز تاجر رہنماء راؤناصر علی خان میؤ،میڈیا سیکرٹری لاہور امتیازعلی شاکرنے گلگت میں غیرملکی سیاحوں کے قتل کی شدیدمذمت کرتے ہوئے کہاکہ ملک میں دہشت گردی کی کاروائیوں میں بیرونی ہاتھ ملوث ہے ،پاکستان کو عالمی سطح پربدنام کیا جارہاہے ،حکومت دہشت گردی کی روک تھام کے لئے فوری اقدام کررہی ہے،ان خیالات کا اظہار انہوں نے گلگت بلتستان میں قتل ہونے والے غیر ملکی سیاحوں کے قتل کی شدید مذمت کرتے ہوئے کیا،راؤ ناصرعلی خان مئیو نے مزید کہا کہ انشاء اللہ میاں نواز شریف کی قیادت میں ملک سے دہشتگردوں کوکیفر کردار تک پہنچایا جائیگا،اور پاکستان پھر سے امن کا گہوارا بنے گا،جس میں بیرون ممالک سے سیاح بھی سیروتفریح کے لئے آئینگے۔

یہ بھی پڑھیے :

One Comment

  1. پاکستان میں غیر ملکی سیاحوں کا قتل ملک کو بین الاقوامی برادری سے الگ تھلگ کروانے
    اور ملکی معیشت کو سیاحت کی مد میں ہونی والی آمدن سے محروم کرکے ناقابل تلافی نقصان
    پہنچانے کی ایک مذموم اور ملک دشمن طالبانی کاراوائی ہے۔

    دہشت گردی مسلمہ طور پر ایک لعنت و ناسور ہے نیز دہشت گرد نہ تو
    مسلمان ہیں اور نہ ہی انسان۔ گذشتہ دس سالوں سے پاکستان دہشت گردی کے ایک گرداب میں
    بری طرح پھنس کر رہ گیا ہے اور قتل و غارت گری روزانہ کا معمول بن کر رہ گئی ہےاور
    ہر طرف خوف و ہراس کے گہرے سائے ہیں۔ معیشت تباہ ہوچکی ہے۔

    خودکش حملے اور بم دھماکے اسلام میں جائز نہیں یہ اقدام کفر ہے.
    اسلام ایک بے گناہ فرد کے قتل کو پوری انسانیت کا قتل قرار دیتا ہے اور سینکڑوں ہزاروں
    بار پوری انسانیت کاقتل کرنے والے اسلام کو ماننے والے کیسے ہو سکتے ہیں؟ دہشت گرد
    خود ساختہ شریعت نافذ کرنا چاہتے ہیں اور پاکستانی عوام پر اپنا سیاسی ایجنڈا مسلط
    کرنا چاہتے ہیں جس کی دہشت گردوں کو اجازت نہ دی جا سکتی ہے۔معصوم شہریوں، عورتوں اور
    بچوں کو دہشت گردی کا نشانہ بنانا، قتل و غارت کرنا، خود کش حملوں کا ارتکاب کرنا اورپرائیوٹ،
    ملکی و قومی املاک کو نقصان پہنچانا، مسجدوں پر حملے کرنا اور نمازیوں کو شہید کرنا
    ، عورتوں اور بچوں کو شہید کرناخلاف شریعہ ہے اور جہاد نہ ہے۔ کسی بھی مسلم حکومت کے
    خلاف علم جنگ بلند کرتے ہوئے ہتھیار اٹھانا اور مسلح جدوجہد کرنا، خواہ حکومت کیسی
    ہی کیوں نہ ہو اسلامی تعلیمات میں اجازت نہیں۔ یہ

    فتنہ پروری اور خانہ جنگی ہے،اسے شرعی لحاظ سے محاربت و بغاوت،
    اجتماعی قتل انسانیت اور فساد فی الارض قرار دیا گیا ہے۔ دہشت گرد ،اسلام کے نام پر
    غیر اسلامی و خلاف شریعہ حرکات کے مرتکب ہورہے ہیں اور اس طرح اسلام کو بدنام کر رہے
    ہیں. اسلام نافذ کرنے کا دعوی کرنے والے دن رات اسلامی اصولوں و شعار کا مذاق اڑا
    رہے ہیں ۔

  2. پاکستان میں غیر ملکی سیاحوں کا قتل ملک کو بین الاقوامی برادری سے الگ تھلگ کروانے
    اور ملکی معیشت کو سیاحت کی مد میں ہونی والی آمدن سے محروم کرکے ناقابل تلافی نقصان
    پہنچانے کی ایک مذموم اور ملک دشمن طالبانی کاراوائی ہے۔

    دہشت گردی مسلمہ طور پر ایک لعنت و ناسور ہے نیز دہشت گرد نہ تو
    مسلمان ہیں اور نہ ہی انسان۔ گذشتہ دس سالوں سے پاکستان دہشت گردی کے ایک گرداب میں
    بری طرح پھنس کر رہ گیا ہے اور قتل و غارت گری روزانہ کا معمول بن کر رہ گئی ہےاور
    ہر طرف خوف و ہراس کے گہرے سائے ہیں۔ معیشت تباہ ہوچکی ہے۔

    خودکش حملے اور بم دھماکے اسلام میں جائز نہیں یہ اقدام کفر ہے.
    اسلام ایک بے گناہ فرد کے قتل کو پوری انسانیت کا قتل قرار دیتا ہے اور سینکڑوں ہزاروں
    بار پوری انسانیت کاقتل کرنے والے اسلام کو ماننے والے کیسے ہو سکتے ہیں؟ دہشت گرد
    خود ساختہ شریعت نافذ کرنا چاہتے ہیں اور پاکستانی عوام پر اپنا سیاسی ایجنڈا مسلط
    کرنا چاہتے ہیں جس کی دہشت گردوں کو اجازت نہ دی جا سکتی ہے۔معصوم شہریوں، عورتوں اور
    بچوں کو دہشت گردی کا نشانہ بنانا، قتل و غارت کرنا، خود کش حملوں کا ارتکاب کرنا اورپرائیوٹ،
    ملکی و قومی املاک کو نقصان پہنچانا، مسجدوں پر حملے کرنا اور نمازیوں کو شہید کرنا
    ، عورتوں اور بچوں کو شہید کرناخلاف شریعہ ہے اور جہاد نہ ہے۔ کسی بھی مسلم حکومت کے
    خلاف علم جنگ بلند کرتے ہوئے ہتھیار اٹھانا اور مسلح جدوجہد کرنا، خواہ حکومت کیسی
    ہی کیوں نہ ہو اسلامی تعلیمات میں اجازت نہیں۔ یہ

    فتنہ پروری اور خانہ جنگی ہے،اسے شرعی لحاظ سے محاربت و بغاوت،
    اجتماعی قتل انسانیت اور فساد فی الارض قرار دیا گیا ہے۔ دہشت گرد ،اسلام کے نام پر
    غیر اسلامی و خلاف شریعہ حرکات کے مرتکب ہورہے ہیں اور اس طرح اسلام کو بدنام کر رہے
    ہیں. اسلام نافذ کرنے کا دعوی کرنے والے دن رات اسلامی اصولوں و شعار کا مذاق اڑا
    رہے ہیں ۔

Back to top button
error: Content is Protected!!