شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / ٹیکسلا:پی او ایف اس نمائش کے دوران مختلف ممالک کے ساتھ دفاعی پیداوار میں باہمی تعاون بڑھانے کے لیےایگریمنٹ پردستخط

ٹیکسلا:پی او ایف اس نمائش کے دوران مختلف ممالک کے ساتھ دفاعی پیداوار میں باہمی تعاون بڑھانے کے لیےایگریمنٹ پردستخط

ٹیکسلا ( ڈاکٹر سید صابر علی سے)لیفٹیننٹ جنرل عمر محمود حیات، ہلال امتیاز (ملٹری) چیئرمین پی او ایف بورڈ کی سربراہی میں پی او ایف کی ٹیم ابو ظہبی میں منعقدہ دفاعی نمائش IDEX-2017میں شریک ہے۔ پی او ایف اپنی مصنوعات کی مکمل رینج کے ساتھ اس بین الاقوامی میگا ایونٹ میں شرکت کر رہی ہے اور اس ریجن سے بڑی تعداد میں اپنے نئے گاہک حاصل کرنے کے لیے پُر امید ہے۔ پی او ایف اس نمائش کے دوران مختلف ممالک کے ساتھ دفاعی پیداوار میں باہمی تعاون بڑھانے کے لیے کئی ایگریمنٹ بھی دستخط کرنے جا رہی ہے ۔ پی او ایف کا مشہور ہتھیار پی او ایف آئی کو بھی اس نمائش میں ڈسپلے کیا گیا ہے اوریہ ویپن غیر ملکی وفود کی توجہ کا مرکز بنا ہوا ہے۔ اس ویپن کی خصوصیت یہ ہے کہ شوٹر اپنے آپ کو ظاہر کیے بغیر اپنے ٹارگٹ کا نشانہ لے سکتا ہے ۔پاکستان دنیا کا دوسرا اور اسلامی دنیا میں پہلا ملک ہے جس کے پاس جدید سسٹم سے لیس یہ ہتھیار بنانے کی صلاحیت ہے۔ IDEXکے دوسرے روز پی او ایف سٹال پر پی او ایف اور Berettaاٹلی کے مابین ایک LoU((Letter of Understanding پر دستخط ہوئے ۔ جس کے تحت پی او ایف Berettaمصنوعات پسٹل، شاٹ گن اور اپیرل پاکستان میں فروخت کرے گا۔ پی او ایف اور Berettaنے اس بات پر اتفاق کیا کہ دونوں کمپنیاں پاکستان میں Berettaکی مصنوعات کے حوالے سے مستقبل کے کاروباری مواقعوں کے لیے ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کریں گی اور ایکسپورٹ مارکیٹنگ بڑھانے کے لیے مشترکہ مارکیٹنگ اور تعاون کیا جائے گا۔ Berettaاعلیٰ معیار کی مصنوعات بنانے کے لیے ایک مشہورBrand ہے جبکہ پی او ایف پچھلے 60سال میں جدید ہتھیار بنا رہا ہے اور پاکستان میں دفاعی پیداوار میں Mother Defence Industryکی حیثیت رکھتا ہے۔ دنیا کی دو مشہورBrands کے مابین باہمی تعاون سے کاروباری سرگرمیوں میں اضافہ ہوگا اور یہ معاہدہ دونوں کمپنیوں کے لیے منفعت بخش ثابت ہو گا۔ لیفٹیننٹ جنرل عمر محمود حیات، ہلال امتیاز (ملٹری) چیئرمین پی او ایف بورڈ نے پی او ایف کی طرف سے اس LoUپر دستخط کیے جبکہ Berettaکی جانب سے Mr. Antonio Biondo ڈیفنس سیلز ڈائریکٹر Berettaاٹلی نے دستخط کیے۔

یہ بھی پڑھیں  پشاور : دہشت گردی کے خطرات کے پیش نظر تمام حساس ترین مقامات پر سیکورٹی سخت