بین الاقوامیتازہ ترین

امریکا نے شام کے خلاف فوجی کارروائی کا آغازکردیا

واشنگٹن(ڈیسک نیوز )امریکا نے شام کے خلاف فوجی کارروائی کا آغازکردیا۔ امریکا کی جانب سے انسٹھ ٹام ہاک کروز میزائل شام کے ایئر بیس پر فائر کیے گئے۔امریکا نے شام کے خلاف فوجی کارروائی کا آغاز کردیا ہے۔شام کےشہرادلیب میں مبینہ کیمیائی حملےکےبعد امریکا نے شام کی ائیربس پرفضائی حملہ کیا ہے۔ امریکا نے روس کے سوامتعدد ممالک کو اپنی فوجی کارروائی سے آگاہ کردیا ہے جبکہ شام نے اس حملے کو اشتعال انگیز قرار دیا ہے ۔امریکی محکمہ دفاع کے مرکز پینٹاگون کے مطابق مشرقی بحیرہ روم میں بحری بیڑے سے59 ٹام ہاک کروز میزائل سے شام کے ہوائی اڈے کو نشانہ بنایاگیا۔ پینٹاگون کے مطابق حملے میں میزائل سے لاجسٹک اوراسلحہ کےذخیرے کو نشانہ بنایا گیا۔ترجمان وائٹ ہاؤس کے مطابق جس ائر بیس کو نشانہ بنایا گیا اس کا براہ راست تعلق خوفناک کیمیائی ہتھیاروں کے حملے سے تھا۔رواں ہفتے کے اوائل میں کیمیائی حملہ بشارالاسد حکومت کی کمانڈ میں اسی مقام سے فضائیہ کی مدد سے کیا گیا تھا۔امریکی حملے کے بعد شام کے سرکاری ٹی وی پر بیان جاری کیا گیا کہ امریکی جارحیت نے شام کے ایک فوجی اڈے پر میزائل حملہ کیا ہے ۔دوسری جانب امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ کیمیائی حملے میں معصوم بچوں کا قتل انسانیت کی توہین ہے جس میں تمام حدود پامال کر دی گئیں،شام اور اسد کے حوالے سے میرا رویہ کافی حد تک بدل گیا ہے۔ امریکی صدرنے قوم سے خطاب میں کہا کہ آمر بشارالاسد کے خلاف شام پر ٹارگٹڈ حملے کا حکم دے دیا ہے ۔ مہذب ممالک بشارالاسد کی حکومت کے خاتمے میں مدد کریں۔ آمر بشار الاسد نے بے گناہ لوگوں کو سفاکی سے مارا۔ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ شام پر فضائی حملہ وسیع تر قومی مفاد میں کیا۔شام میں خانہ جنگی بند کرانے کیلئے امریکا کا ساتھ دیں۔ ہرطرح کی دہشت گردی کا ہمیشہ کیلئے خاتمے کیلئے ساتھ دیں۔واضح رہے کہ شام کے شہر ادلب کے علاقے خان شیخون میں باغیوں کے زیر قبضہ علاقے پر بشار الاسد اور روس کی فوج نے زہریلی گیس والے بموں سے حملہ کیا تھا، واقعے میں جاں بحق افراد کی تعداد 100 سے تجاوز کر گئی جبکہ 400 سے زائد افراد زخمی بھی ہوئے، جاں بحق اور زخمیوں میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔امریکہ اور مغربی اتحادیوں نے شام پر فضائی حملے کے دوران کیمیائی ہتھیار استعمال کرنے کا الزام عائد کیا جس کی بشارالاسد حکومت نے تردید کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں  چُوریاں اورچوریاں

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker