تازہ ترینعلاقائی

بھائی پھیرو:انسداد تمباکو نوشی کے عالمی دن کے موقع پر جماعت اسلامی یوتھ ونگ ضلع قصور کے زیر اہتمام سیمینار

بھائی پھیرو(نامہ نگار) انسداد تمباکو نوشی کے عالمی دن کے موقع پر جماعت اسلامی یوتھ ونگ ضلع قصور کے زیر اہتمام سیمینار ۔ حکومت نے حالیہ بجٹ میں ضروریات زندگی مہنگے جبکہ سگرٹ سستے کر کے عوام کو مارنے کا منصوبہ بنایاہے۔ تمباکو نوشی سے انسانی صحت کو لاحق خطرات اور اس کے مضر اثرات کے متعلق عوام کو آگاہی فراہم کرنا بین القوامی اور قومی فریضہ ہے۔ تمباکو نوشی دنیا بھر میں ہائی بلڈ پریشر کے بعداموات کی دوسری بڑی وجہ ہے۔ مقررین کا اظہار خیال۔ تفصیلات کے مطابق سرائے مغل کے نواحی ہیڈ بلوکی پر جماعت اسلامی یوتھ ونگ ضلع قصور کے صدر حافظ محمد احمد کی زیر صدارت انسداد تمباکونوشی کے عالمی دن کے موقعے پرایک سیمینار کا انعقاد کیا گیا جس میں نوجوانوں کی بھاری تعداد نے شرکت کی۔اس موقع پر شرکا سے تقریر کرتے یونائیٹدکرسچن پارٹی پاکستان کے صدر ڈاکٹر نیامت عظیم سہوترا نے کہا کہ آپ کو جان کر حیرت ہوگی کہ دنیا بھرکی ایک ارب سے زائدآبادی سگریٹ و تمباکو نوشی کی لت میں مبتلا ہے۔ عالمی ادارہ صحت کی رپورٹ کے مطابق دنیا بھر میں سگریٹ و تمباکو نوشی کے باعث ہر چھ سیکنڈ کے بعد ایک شخص موت کو گلے لگا رہا ہے، ا س طرح دنیا بھر میں ہر سال ساٹھ لاکھ افراد تمباکو نوشی کے باعث موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں، جن میں سے تقریباً چھ لاکھ سے زیادہ افراد ایسے ہوتے ہیں جو خود تمباکونوشی نہیں کرتے بلکہ تمباکونوشی کے ماحول میں موجود ہونے کے سبب اس کے خطرناک دھوئیں کا شکار ہوجاتے ہیں۔معروف معالج ڈاکٹر مہر جاوید نے بتایا کہ پاکستان، بھارت، فلپائن، تھائی لینڈ اور کمبوڈیا میں سگریٹ و تمباکو نوش لوگوں کی شرح تیزی سے بڑھ رہی ہے اور اس اضافے کا بڑا سبب ان ممالک کا نوجوان طبقہ ہے۔ سگریٹ میں موجود نکوٹین انسان کے اعصاب پراس طرح سوار ہوتی ہے کہ وہ سگریٹ پئے بغیر نہیں رہ سکتا۔ تمباکو میں موجود نکوٹین دماغ میں موجود کیمیکل مثلاً ڈوپامائن اور اینڈروفائن کی سطح بڑھادیتا ہے جس کی وجہ سے نشہ کی عادت پڑ تی ہے۔ جسم میں نکوٹین کی کمی سے طبیعت میں پریشانی، اضطراب، بے چینی، ڈپریشن کے ساتھ ذہنی توجہ کا فقدان رہنے لگتا ہے۔ تمباکو نوشی بہت آہستگی کے ساتھ جسم کے مختلف اعضائکو نقصان پہنچانا شروع کرتی ہے اور متاثرہ افراد کو کئی سالوں تک اپنے اندر ہونے والے نقصانات کا علم ہی نہیں ہوپاتا، اور جب یہ نقصانات واضح ہونا شروع ہوتے ہیں تب تک جسم تمباکو کے نشے کا مکمل طور پر عادی ہوچکا ہوتا ہے اور اس سے جان چھڑانا بہت مشکل ہو جاتا ہے۔جماعت اسلامی ضلع قصور کے قایم مقام امیر سردار نور احمد ڈوگر نے کہا کہ آجکل نوجوان نسل صحیح تربیت نہ ہونے اور قرآن و سنت کی تعلیمات سے دور ہونے کی وجہ سے غیر اخلاقی سرگرمیوں اور نشے کی لت میں مبتلا ہو چکی ہے ۔جے آئی یوتھ کے ذریعے جماعت اسلامی نوجوان نسل کو مثبت سرگرمیوں کا عادی بنا کر،کھیلوں میں دلچسپی پیدا کرنے تمبا کو نوشی اور منشیات نوشی سے دور رکھا جا سکتاہے۔انہوں نے جے آئی یوتھ کو اس پروگرام منعقد کرنے پر مبارکباد دی۔ ڈاکٹر داؤد پرویز مغل نے کہا تحقیق کے مطابق تمباکو اور اس کے دھوئیں میں پچاس سے زائد ایسے کیمیکل موجود ہوتے ہیں جو کینسر کا باعث بن سکتے ہیں۔سگریٹ نوش سانس کی بیماریوں کا شکار ہوجاتا ہے، اس سے سانس لینے میں شدید دشواری اور انفیکشن یعنی نمونیہ ہونے کاخطرہ رہتا ہے۔ اس حالت میں پھیپھڑوں کے ٹشو ہمیشہ کے لئے ٹوٹ پھوٹ جاتے ہیں جس سے مریض کو شدید کھانسی اور دمہ کی علامات پیدا ہوجاتی ہیں۔ اسلامی جمعیت طلبا ضلع قصورکے رہنما احمد جمال نے کہا سگریٹ نوش کی طرح اس کے گھر اور ساتھ کام کرنے والوں میں بھی سگریٹ کے دھوئیں کی وجہ سے ان بیماریوں کا خطرہ بہت بڑھ جاتا ہے۔ اگر سگریٹ نوش کی بات کی جائے تو یہ فقط اپنی زندگی کے لیے خطرہ نہیں بنتا بلکہ اس کی وجہ سے دوسروں کی صحت کو بھی نقصان پہنچتا ہے۔ ماہر معاشیات اور معروف قانون دان چوہدری عبدالرزاق ایڈ ووکیٹ نے کہاکہ موجودہ بجٹ میں ضروریات زندگی کی اشیا پر بے انتہا ٹیکس لگا کر لوگوں کی زندگیاں اجیرن بنا دی گئیں مگر سگرٹ سستے کرکے عالمی انسداد تمبا کو نوشی کے دن کے موقعے پر عالمی اداروں کے منہ پر تھپڑ مارا۔سگرٹ سستے ہونے کی وجہ سے پاکستان میں تمباکو و سگریٹ نوشی کرنے والوں کی تعداد میں بے انتہا اضافہ ہو جائے گا چاہیے تو یہ تھا کہ سگرٹ مہنگے کر کے سگرٹ نوشی کی حوصلہ شکنی کی جاتی مگر حکومت نے سگرٹ کی فی ڈبی پچیس روپے سستی کر کے عوام کو موت کے منہ میں دھکیل دیا ہے۔ عالمی دن کے موقع پر ہمیں یہ عہد کرنا ہوگا کہ ہم ہمیشہ سگریٹ و تمباکو نوشی کی پیشکش سے انکار کریں گے، اور سگریٹ نوش افراد سگریٹ و تمباکو نوشی کی عادت کو ترک کرنے کی سنجیدہ کوشش کریں گے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button