تازہ ترینکھیل

قومی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی فہیم اشرف کا بھائی پھیرو پہنچنے پر شاندار استقبال

بھائی پھیرو(نامہ نگار)انڈیاسے میچ جیت کر آنے والے بھائی پھیرو کے قومی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی فہیم اشرف کا بھائی پھیرو پہنچنے پر شاندار استقبال ۔سارا شہر امڈ آیا۔ خوشی میں جشن کا سماں،ڈھول کی تھاپ پر بھنگڑے،مٹھائیاں تقسیم ۔قومی کھلاڑی بھائی پھیرو کے فہیم اشرف کے گھر مبارکبادیں دینے والوں کا تانتا بند گیا۔فہیم نہ صرف ہمارا بلکہ ساری قوم کا بیٹا ہے۔ کھلاڑی کے باپ اور دادا کا خطاب ۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز انڈیاسے کرکٹ میچ کے جیت کر واپس اپنے شہر آنے والے قومی کھلاڑی رانا فہیم اشرف کا بائی پاس پرناواں کے قریب شاندار استقبال کیا گیا۔منوں پھولوں کی پتیاں نچھاور کی گئیں اور پاکستان زندہ باد اور انڈیا مردہ باد کے فلک شگاف نعرے لگائے گئے ۔انکی آمدکی خبر سنتے ہی بھائی پھیرو اور گردونواح سے نوجوانوں کی ٹولیاں سڑکوں پر نکل کر آئیں اور خوشی سے ڈھول کی تھاپ کر بھنگڑے ڈالنے لگیں ۔ خوشی میں سارے راستہ جشن کا سماں رہا ، کرکٹ کے منچلے بھنگڑا ڈالتے ہوئے بھائی پھیرو کے قومی کھلاڑی فہیم اشرف پر پھولوں کی پتیاں نچھاور کرتے رہے اور کھلاڑی اور اسکے رشتہ داروں کو گلے مل کر مبارکبادیں دیتے رہے۔ منچلے نوجوانوں تنویر بابو اور محمد نبیل سمیت کئی کرکٹ کے شوقینوں نے مٹھائی کی دُکانوں سے مٹھائی خرید خریدکر بھنگڑا ڈالتے نوجوانوں میں تقسیم کر دی ۔ بھائی پھیرو پریس کلب کے صحافیوں سید بابر مشہدی اور نعیم سلطان نے پریس کلب بھائی پھیرو کی طرف سے فہیم انکے والد رانا محمد اشرف ایڈووکیٹ،اورمعروف مار تعلیم رانا محمد عاشق کے گلے میں پھولوں کے ہار ڈالے ۔ اسلامی جمعیت وکلا کے مرزا نوید بیگ، اسلامی جمعیت طلبا ضلع قصورکے رہنما احمد جمال اور جماعت اسلامی بھائی پھیرو کے کارکنان ،معززین ،عوام سمیت مقامی کھلاڑیوں کی بڑی تعداد بھی اس موقع پرموجود تھی ۔ پیپلز پارٹی کے رہنما رانا تنویر ریاض خان نے بھی کھلاڑی کے گلے میں ہار ڈالے ۔اس موقع پرخطاب کرتے کھلاڑی فہیم اشرف نے شاندار استقبال کرنے پر عوام اور پوری قوم کا شکریہ ادا کیا جبکہ رانا اشرف اور رانا عاشق نے کہا کہ فہیم اشرف صرف ہمارا نہیں بلکہ پوری قوم کا بیٹا اور سرمایہ ہے ۔اس موقع پر عوام نے کہاکہ اگربھائی پھیرو رانا حیات سٹیڈیم کی حالت زار پر رحم کھا کر اسکی حالت بہتر بنائی جائے تو بھائی پھیرو سے اور بھی قومی کھلاڑی پیدا ہو سکیں ۔

یہ بھی پڑھیں  چراغ تلے اندھیرا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker