پاکستانتازہ ترین

کاغذات کی جانچ پڑتال، کلثوم نواز کے سر پر نااہلی کی تلوار

لاہور(نمائندہ خصوصی) این اے 120 کے ضمنی انتخابات کیلئے الیکشن کمیشن نے اُمیدواروں کے کاغذات کی جانچ پڑتال کا عمل شروع کر دیا۔ کلثوم نواز کے سر پر نااہلی کی تلوار لٹک گئی۔ تحریک انصاف، عوامی تحریک اور پیپلز پارٹی نے کلثوم نواز کی اہلیت چیلنج کر دی۔تفصیلات کے مطابق  این اے 120 کے انتخابات کے لیے الیکشن کمیشن نے اُمیدواروں کے کاغذات کی جانچ پڑتال کاعمل شروع کردیا، پہلے روز 25 اُمیدواروں کو کاغذات کی جانچ پڑتال کے لیے بلوایا گیا۔ مسلم لیگ ن کی اُمیدوار بیگم کلثوم نواز کو 17 اگست کو تین بجے سہ پہر جبکہ تحریک انصاف کی ڈاکٹر یاسمین راشد کو دوپہر گیارہ بجے الیکشن کمیشن طلب کیا گیا۔پیپلز پارٹی ورکر ساجدہ میر نے ریٹرنگ افسر کے سامنے کاغذات کی جانچ پڑتال کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کلثوم نواز کو سیاست کی، الف، ب، مشرف کے دور میں پتا لگی جبکہ ڈاکٹر یاسمین راشد کو سیاست میں آئے جمعہ جمعہ آٹھ دن ہوئے ہیں۔پیپلز پارٹی کے اُمیدوار فیصل میر نے ریٹرنگ افسر کے پاس کلثوم نواز کی نااہلی کے لیے جمع کرائی گئی درخواست میں کہا کہ کلثوم نواز دوہری شہریت رکھتی ہیں، مسلم لیگ ن کے صدر کو نااہل کیا گیا لہذا انکی جماعت الیکشن لڑنے کیلئے اہل نہیں رہی۔پاکستان عوامی تحریک کے چودھری اشتیاق نے بھی کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی کو ریٹرنگ افسر کے سامنے چیلنج کردیا۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ کاغذات نامزدگی میں اقامہ کی بنیاد والا معاہدہ منسلک نہیں۔ڈاکٹر یاسمین راشد کے وکیل نے بھی این اے 120 میں مسلم لیگ ن کی جانب سے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر دستاویزی ثبوتوں کے ساتھ درخواست دائر کی ہے۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے اُمیدواروں کے کاغذات کی جانچ پڑتال کا عمل 17 اگست تک جاری رہے گا۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button