تازہ ترینعلاقائی

پھولنگر:محکمہ انہار کےافسران بااثر مچھلی فروش سے محکمہ نہر کی زمین کا ناجائز قبضہ نہ چھڑوا سکے

بھائی پھیرو(نامہ نگار)اعلی حکام کے تحریری حکم کے باوجودہیڈ بلوکی پرمحکمہ انہار کے تمام افسران با اثر مچھلی فروش سے محکمہ نہر کی زمین کا ناجائز قبضہ نہ چھڑوا سکے ۔ چہیتے مچھلی فروش کونوازنے کیلیے مسجد کے رقبہ میں کمی کردی۔عوامی ،سماجی ،مذہبی حلقوں کی طرف سے مسجد کو منظور شدہ نقشہ کے مطابق تعمیر کرنے اور اربوں کی سرکاری زمینوں کے قبضہ گروپوں سے قبضہ چھڑوانے کا مطالبہ۔تفصیلات کے مطابق ہیڈ بلوکی پر محکمہ انہار کے زیر اہتمام ایک مسجد کی تعمیر کی جا رہی ہے مگر محکمہ کے کرپٹ افسران نے اللہ کے گھر کو بھی نہیں بخشا اور اپنے چہیتے قبضہ گروپ کو نوازنے کیلیے مسجد کے رقبہ میں کمی کرکے با اثر افراد کو سرکاری زمینوں پر ناجائز قبضہ کرنے کی کھی چھٹی دے دی ہے۔سماجی رہنما توقیر نے کہا ہے کہ مسجد کی جگہ پر ایک با اثر مجھلی فروش رشید نے قبضہ کر رکھا ہے اور پورا محکمہ انہار اسکے سامنے بے بس ہے ۔عوامی شکایات پر اعلی حکام نے ہیڈ بلوکی کے افسران کو اس جگہ کا قبضہ چھڑوانے کا حکم دے دے رکھا ہے مگر مقامی افسران نے اس حکم کو ہوا میں اڑا دیا ہے ۔توقیر نے کہا کہ محکمہ انہار کے اعلی حکام نے 2-4-2018 کو چھٹی نمبر 260کے ذریعے مقامی افسران کو قبضہ چھڑوانے کیلیے لکھا مگر مقامی افسران نے اس حکم کو ہوا میں اڑا دیا۔مقامی سماجی رہنماؤں نے کہا ہے کہ رقبہ میں کمی سے مسجد چھوٹی رہ جائے گی اور یہ مسجد مستقبل میں نمازیوں کی ضروریات پوری نہیں کر سکے گی۔مذہبی رہنماؤں اور کئی سماجی رہنماؤں نے مسجد کو نقشہ کے مطابق تعمیر کرنے کا مطالبہ کیا ہے اور اعلی حکام سے ہیڈ بلوکی میں تعمیرات اور زمین پر ناجائز قابضین کیخلاف کروڑوں کے گھپلوں کی تحقیقات کرنے کا مطالبہ کیا ہے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button