شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / بروقت انتخاب نہیں سخت احتساب ناگزیر ہے۔محمدناصراقبال خان

بروقت انتخاب نہیں سخت احتساب ناگزیر ہے۔محمدناصراقبال خان

لاہور(پریس ریلیز) ہیومن رائٹس موومنٹ انٹرنیشنل کے مرکزی صدرمحمدناصراقبال خان،چیف آرگنائزر میاں محمدسعید کھوکھر ایڈووکیٹ ،مرکزی آرگنائزر نازبٹ ، سیکرٹری جنرل محمدرضاایڈووکیٹ ،سینئر نائب صدورتنویرخان، محمداشرف عاصمی ایڈووکیٹ، ندیم اشرف ،سلمان پرویز،روحی کھوکھرایڈووکیٹ ،مرکزی نائب صدور ناصرچوہان ایڈووکیٹ ، ممتازاعوان ،محمدشاہدمحمود ،صدر پنجاب محمدیونس ملک،صدربرطانیہ رانابشارت علی خاں ،صدرنیویارک محمد جمیل گوندل، صدر مدینہ منورہ سرفرازخان نیازی،صدرکراچی یونس میمن ،صدر چنیوٹ راناشہزادٹیپو ،صدرفیصل آبادندیم مصطفی،صدرٹیکسلا سردارمنیر اختر اور صدر قصور میاں اویس علی نے کہا ہے کہ بروقت انتخاب نہیں سخت احتساب ناگزیر ہے۔احتساب کی کلین چٹ والے سیاستدان شوق سے انتخاب میں عوام سے رجوع کریں۔ووٹ کوعزت دوکانعرہ محض سیاسی سٹنٹ ہے،باشعورعوام نے اس بیانیہ کو مسترد کردیا۔عوام کو فراڈ انتخاب سے کوئی سروکار نہیں ،انہیں تواحتساب کی صورت میں اس سیلاب میں دلچسپی ہے جوچوروں کواپنے ساتھ بہالے جائے ۔پاکستان میں سیاسی ومعاشی استحکام کاراستہ انتخاب نہیں احتساب سے ہوکرجاتا ہے۔قیام پاکستان سے اب تک کئی انتخاب اوران میں زیادہ ترچورمنتخب ہوئے مگرایک بار بھی حکمران اشرافیہ کا بے رحم احتساب نہیں ہوا ۔ستردہائیوں بعدخودمختارنیب نے جواحتساب شروع کیاہے اسے منطقی انجام تک پہنچایا جائے ۔چوروں کو ہر صورت منتخب اوراقتدار کے ایوانوں میں داخل ہونے سے روکناہوگا۔وہ ایک اجلاس سے خطاب کررہے تھے۔محمدناصراقبال خان ،میاں محمدسعید کھوکھر اورنازبٹ نے مزید کہا کہ جومٹھی بھر خاندان پچھلے سترسال سے پاکستان اورپاکستانیوں کونوچ رہے ہیں انہیں سیاست سے تاحیات بیدخل کردیا جائے ۔ پاکستان کے قومی وسائل غصب کرنیوالے عناصرنے پاکستانیوں کومسائل کے سواکچھ نہیں دیا ۔انہوں نے کہا کہ نیب کومطلوب سیاستدانوں کا انتخاب کواحتساب قراردینا فراڈ ہے۔۔انہوں نے کہا کہ جس ملک میں ووٹرکی عزت نہیں وہاں ووٹ کی عزت کیا خاک ہوگی،” ووٹ کو عزت دو” کا نعرہ لگانیوالے نوازشریف وزیراعظم اوروزیراعلیٰ پنجاب کی حیثیت سے اپنے دوراقتدارمیں ووٹرکااستحصال اورووٹ کاتقدس پامال کرتے رہے ۔ ووٹرزکی عزت اورانہیں شریک اقتدارکئے بغیر سیاسی قیادت باعزت نہیں ہوسکتی ۔ انہوں نے کہا کہ شہریوں کے بنیادی انسانی حقوق کی بازیابی اورتعلیمی وطبی اداروں کواپ گریڈکرنے کیلئے آزادعدلیہ کی حالیہ اصلاحات درست اوردوررس ہیں۔

یہ بھی پڑھیں  ڈنگہ