شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / بھائی پھیرو:الیکشن میں امیدواروں نے ووٹ مانگنے کے نئے نئے جدید طریقے ایجاد کرلیے

بھائی پھیرو:الیکشن میں امیدواروں نے ووٹ مانگنے کے نئے نئے جدید طریقے ایجاد کرلیے

بھائی پھیرو(نامہ نگار)الیکشن میں امیدواروں نے ووٹ مانگنے کے نئے نئے جدید طریقے ایجاد کرلیے۔کچھ امیدوار منتیں،ترلے کرکے اورکھابے کھلا کراور کچھ لوگ دھمکیاں لگا کر ووٹ مانگنے لگے۔جدید ٹیکنالوجی کا استعمال عام ۔تفصیلات کے مطابق حالیہ الیکشن میں امیدواروں نے ووٹ مانگنے کے روایتی طریقوں کے ساتھ طرح طرح کے نئے طریقے ایجاد کرلیے ہیں۔منتیں ترلے اور معافیاں مانگنا تو ووٹ مانگنے کاپرانا طریقہ ہے جو اس دور میں بھی اتنا ہی موثر ہے جتنا ماضی میں موثر تھا۔معاشی طور پر مضبوط امیدواروں نے ڈیرے سجا کر اور ووٹروں کو طرح طرح کے کھابے کھلا کر ووٹروں کی مہمان نوازی شروع کر رکھی ہے جبکہ غریب امیدوار اپنی غربت کے واسطے دیکر عوام کی توجہ حاصل کرنے کیلیے کوشاں ہیں۔ایک دور میں وال چاکنگ ،کپڑے کے بینر اور سٹینسل،ڈھولچیاور لائڈ سپیکر تشہیر کا بڑا ذریعہ تھے مگر آج کے دور میں ان پر پابندی کے بعدفلیکس پر بنے فوٹواوراخباری اشتہارات نے لے لی ہے۔کئی مقامات پر الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق کی دھجیاں بکھیر کر امیدواروں نے بڑے بڑے جہازی سائز کے سائن بورڈ لگا کر اپنی دولت کی نمائش شروع کر رکھی ہے۔یہ سب کچھ مقامی انتظامیہ اور الیکشن عملہ کی آنکھوں کے سامنے ہو رہا ہے مگر اس کا کوئی نوٹس نہیں لیا جاتا۔ووٹ مانگنے کے پرانے طریقوں کے ساتھ اس دفعہ لوگوں نے جدید ٹیکنالوجی کو بھی استعمال کرنا شروع کردیا ہے۔کیبل پر اشتہار چلوانا،ایس ایم ایس کرنا،سوشل میڈیا پر انٹر نیٹ کا استعمال کر کے فیس بک،ٹوئٹر اور دیگر ذرائع کا استعمال بھی عام ہے۔موبائیل پر ایس ایم ایس کے ذریعے اور فون کرکے ووٹ مانگنے کا رواج عام ہوچکا ہے۔ووٹ مانگنے کے قدیم اور جدید طریقوں کے استعمال کے باوجود پرنٹ اور الیکڑانک میڈیا نے عوام کے سیاسی شعور کو اتنا پختہ کر دیا ہے کہ اب عوام کسی لالچ میں نہیں آئیں گے بلکہ عوام صحیح فیصلہ کرکے امیدواروں کو ٹف ٹائم دیں گے ۔منتیں ترلے کرنے کے ساتھ ساتھ کئی جگہ بعض امیدوار ووٹروں کو دھمکیاں دیکر اور خوفزدہ کرکے بھی ووٹ مانگ رہے ہیں اور کئی جگہ امیدواروں نے اپنی جیبوں میں قرآن پاک رکھا ہوا ہے اور وہ ووٹروں سے قسمیں اٹھوا کر اور حلف لیکر الیکشن قوانین کی دھجیاں بکھیر رہے ہیں۔علاقے کی سیاسی جماعتوں پیپلز پارٹی ،جماعت اسلامی، اور دیگر نے الیکشن کمیشن سے اپیل کی ہے کہ وہ ضابطہ اخلاق کی دھجیاں بکھیرنے والے امیدواروں کو نا اہل قرار دے اور دھونس دھاندلی اور سرکاری وسائیل استعمال کرنے والوں کو الیکشن سے آؤٹ کر دے

یہ بھی پڑھیں  عیدالفطر مسلمان کیلئے خوشی اور تشکر کا دن ہے، وزیر اعظم