شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / پھولنگر:ہم سو دنوں تک تحریک انصاف کے وعدوں پر عملدرآمد کے منتظر ہیں۔حاجی رمضان

پھولنگر:ہم سو دنوں تک تحریک انصاف کے وعدوں پر عملدرآمد کے منتظر ہیں۔حاجی رمضان

بھائی پھیرو(نامہ نگار)اداروں کی غیر قانونی مداخلت،الیکشن کمیشن اور ریاستی ادارے عوام کے سوالات کی زد میں میں۔جماعت اسلامی حلقہ این اے 140کے امیدوار حاجی محمد رمضان نے کہاہے کہ ہم سو دنوں تک تحریک انصاف کے وعدوں پر عملدرآمد کے منتظر ہیں۔ دھاندلی زدہ الیکشن پر تحفظات کے باوجود ہم چاہتے ہیں کہ نئی حکومت عوام سے کیے گئے کرپشن فری پاکستان کے وعدے پورے کرے۔ ہم عمران خان کی طرف سے پاکستا ن کو مدینہ کی طرز پر اسلامی ریاست بنانے، سود کے خاتمہ، اسلامی نظریاتی کونسل کے فیصلوں پر عملدرآمد، مہنگائی کے خاتمہ، ایک کروڑ نوجوانوں کو روزگار دینے،معیشت کو آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کے چنگل سے آزاد کرانے اور پچاس لاکھ بے گھروں کو چھت مہیا کرنے کے وعدوں کی تکمیل چاہتے ہیں۔ اب پتہ چلے گا کہ پی ٹی آئی کے نومنتخب ارکان کس طرح اس علاقے میں کرپٹ لوگوں،سرکاری زمینوں کو ہڑپ کرنے والے قبضہ ما فیا،لینڈ مافیا کی لوٹ مار کو بند کراتے ہیں اور مفت میں ہڑپ کی گئی سرکاری اور غیر سرکاری زمینوں کو قبضہ گروپوں سے چھڑواتے ہیں۔میں امید کرتا ہوں کہ تحریک انصاف یہاں کے عوام کو جھوٹے مقدمات،غنڈہ گردی اور منشیات فروشوں سے نجات دلائے گی اور عوام کے بنیادی مسائل حل کرکے انہیں سکھ کا سانس لینے کا موقع فراہم کریں گے۔تبدیلی کے دعوے کرکے ووٹ لینے والے پولیس،پٹواری اور دیگر محکمہ کے کرپٹ محکموں کو کس طرح ٹھیک کرتے ہیں۔ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ الیکشن میں بے ضابطگیوں اور دھاندلی کے خلاف الزامات کے لیے کمیشن تشکیل دیا جائے۔ تمام جماعتوں کو اپنے تحفظات پیش کرنے کا موقع دیا جائے اور ان تحفظات کو دور کیا جائے۔
حاجی رمضان نے کہاکہ کرپشن کے خلاف جماعت اسلامی کی تحریک جاری رہے گی ہم ملک سے نظریاتی، اخلاقی اور معاشی کرپشن کا خاتمہ چاہتے ہیں۔ ہمارا احتساب کے اداروں سے پہلے بھی مطالبہ رہاہے اور اب بھی مطالبہ ہے کہ لٹیروں کا بے لاگ احتساب کیا جائے۔ لوٹی گئی قومی دولت کے بیرونی بنکوں میں پڑے پانچ سو ارب ڈالر واپس لائے جائیں اور ملک پر موجود 83 ارب ڈالر کا قرضہ ادا کرنے کے بعد باقی رقم قومی خزانے میں جمع کرائی جائے ا ور اس سے عوام کو ریلیف دیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ لوٹی گئی رقم کی واپسی اصل کام ہے جس کی طرف آنے والی حکومت کوتوجہ دینا ہوگی۔ ملک میں انتخابات کا بروقت انعقاد اطمینان بخش ہے۔ مذہبی ووٹ متحد ہو کر ایک ناقابل تسخیر قوت بن سکتاہے اور ہم ان شائاللہ دینی جماعتوں کے اتحاد کی کوششیں جاری رکھیں گے۔انہوں نے کہاکہ تمام تر ریاستی قوت اور وسائل کا استعمال کرکے من پسند نتائج حاصل کرنے کے لیے وفاداریاں تبدیل کرائی گئیں جس کی مثال ماضی میں نہیں ملتی کئی کئی گھنٹے تک انتخابی نتائج روک کر تبدیل کیے گئے۔ملک بھر میں پولنگ ایجنٹوں کو فارم 45 نہیں دیے گئے۔ لوگ کبھی ایک اور کبھی دوسرے پولنگ اسٹیشن پر دھکے کھاتے رہے۔ہم نے ریاستی رکاوٹوں کے باوجود مقابلہ کیا ۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں عوامی رائے کا احترام ہے۔ ہم مخالفت برائے مخالفت پر یقین نہیں رکھتے اس لیے ہم مجلس عاملہ کے فیصلوں کے متعلق ایم ایم اے کی دیگر جماعتوں کو اعتماد میں لیں گے اور اپوزیشن کا بھر پور کردار ادا کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں  سکیورٹی خدشات ، تحریک انصاف نے سرگودھا کا جلسہ منسوخ کردیا