شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / لاہور:آئی جی پنجاب کی ٹرانسفرانتظامی نہیں انتقامی فیصلہ ہے:محمدناصراقبال خان

لاہور:آئی جی پنجاب کی ٹرانسفرانتظامی نہیں انتقامی فیصلہ ہے:محمدناصراقبال خان

لاہور(پریس ریلز) ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی صدرمحمدناصراقبال خان نے کہا ہے کہ آئی جی پنجاب محمدطاہرخان کی محض ایک ماہ بعد ٹرانسفرانتظامی نہیں انتقامی فیصلہ ہے ، آزاد عدلیہ فوری طورپر اس متنازعہ معاملے کوٹیک اپ اورانصاف کرے۔پولیس سمیت سبھی سرکاری اداروں میں سیاسی اورانتقامی بنیادوں پرتبادلے روکناہوں گے۔عدالت عظمیٰ نے چندروزبیشتر ڈی پی اوپاکپتن رضوان گوندل کی سیاسی بنیادوں پرٹرانسفر کیخلاف ایکشن لیا اور شدید برہمی کااظہار کیاتاہم وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار اورسابق آئی جی پنجاب سیّدکلم امام کی معذرت قبول کرلی لیکن صوبائی حکومت نے اپنی انتقامی روش تبدیل کرنے کی بجائے پنجاب پولیس کے کمانڈر کیخلاف مہم جوئی شروع کردی ہے۔سرکاری حکام حکمرانوں کے ملازم یاغلام نہیں ہیں،انہیں کٹھ پتلی نہ سمجھاجائے ۔الیکشن کمشن نے آئی جی پنجاب محمدطاہرخان کی تبدیلی کے احکامات معطل کرکے بروقت اوردرست اقدام کیا ۔آئی جی پنجاب محمدطاہرخان زیرک ،پروفیشنل اورڈسپلن کے حامی انتھک پولیس آفیسر ہیں ،وہ سرکاری احکامات کی خلاف ورزی نہیں کرسکتے ،اس سلسلہ میں چارج شیٹ میں کوئی صداقت نہیں ہوسکتی ۔ وہ ایک اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کررہے تھے ۔محمدناصراقبال خان نے مزید کہا کہ پنجاب حکومت نے تبدیلی کی آڑمیں پولیس کلچر کاکچرابنادیا۔ آئی جی پنجاب محمدطاہرخان کی سیاسی بنیادوں پر ٹرانسفر ناقابل فہم اورپولیس میں بدترین مداخلت ناقابل برداشت ہے۔خیبرپختونخوا کے سابق آئی جی ناصرخان درانی نے آئی جی پنجاب محمدطاہر خان کی متنازعہ تبدیلی کے سرکاری فرمان کیخلاف اصولی بنیادوں پراستعفیٰ دیتے ہوئے نام نہادتبدیلی کابے نقاب کردیا۔اگرواقعی تھانہ کلچر بدلنا ہے تو پولیس کوآزادی اورخودمختاری دیناہوگی ۔انہوں نے کہا کہ حکمران پہلے تو اپنے ناجائزایجنڈے کی تکمیل کیلئے پولیس حکام کے کندھوں کااستعمال کرتے ہیں اوربگاڑپیداہونے کے بعد الٹا گناہوں کابوجھ بھی ا نہیں اٹھانے پرمجبورکیاجاتاہے ۔ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے ماسٹرمائنڈ کی گرفتاری کے بعدسہولت کاروں کی بازی آتی ہے ،اس قومی سانحہ میں ملوث پولیس آفیسرزکوتوگرفتارکرلیا گیا مگرماسٹرمائنڈ آج بھی آزاد ہے۔

یہ بھی پڑھیں  مسلم لیگ ن سمیت دیگراپوزیشن جماعتوں کی الیکشن کمشن کوقرارداد پیش