شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / ٹیکسلا:میونسپل کمیٹی میں چئیرمین وائس چئیرمین کے الیکشن کے لئے پولنگ سات جنوری کو متوقع

ٹیکسلا:میونسپل کمیٹی میں چئیرمین وائس چئیرمین کے الیکشن کے لئے پولنگ سات جنوری کو متوقع

ٹیکسلا(ڈاکٹر سید صابر علی سے)ٹیکسلا میونسپل کمیٹی میں چئیرمین وائس چئیرمین کے الیکشن کی تاریخ نذدیک آگئی، مسلم لیگ ن کے دھڑن تختہ کی شنید ،ن لیگی لیڈر حاجی ملک عمر فاروق بلبلا اٹھے،ہارس ٹریڈنگ کی کوشش ناکام بنائیں گے ، کونسلران کو بھاری مراعات دیکر خریدنے کی کوشش کی جارہی ہے ، وفاداریاں تبدیل کر کے اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کیا گا تو بھرپور مذاحمت کریں گے ،تفصیلات کے مطابق ٹیکسلا میونسپل کمیٹی میں چئیرمین وائس چئیرمین کے الیکشن کے لئے پولنگ سات جنوری کو متوقع، ہاوس میں مسلم لیگ ن کے کونسلران کی تعداد 18 جبکہ پی ٹی آئی کے کونسلران کی تعداد بارہ ہے کسی بھی جماعت کو جیتنے کے لئے کل سولہ ممبران درکار ہیں،ادہر مسلم لیگ ن کے سابق ایم پی اے حاجی ملک عمر فاروق نے میڈیا کے سامنے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ ان کے ممبران کی بولی لگائی جارہی ہے،. پی ٹی آئی اپنے منشور کے مطابق اقلیت کو ا کثریت میں بدلنے کی مذموم کوشش نہیں کرے گی،ہمارے نامزد امیدوار برائے چئیرمین شیخ وحید الدین اور وائس چئیرمین ایڈووکیٹ راجہ کامران کے پاس اس وقت واضح اکثریت ہے،اور سب کونسلران مسلم لیگ ن کے پرچم تلے متحد ہیں، ان کا کہنا تھا کہ سیاسی میدان میں مقابلہ سیاسی طریقہ سے ہی کیا جانا چاہئے , مقدمات اور ممبران کی خرید و فروخت کا سلسلہ اب بند ہونا چائیے . گو کہ اطلاعات ہیں کہ ایسی کوششیں کی جارہی ہیں مگر ہم ایسی کسی کوشش کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے ، یاد رہے کہ قبل ازیں ٹیکسلا میونسپل کمیٹی میں مسلم لیگ ن بر سر اقتدار گروپ کے طور سامنے آیا مگر خود عمر فاروق نے اس میں دراڑیں ڈال کر دو گروپوں میں مسلم لیگ ن کو تقسیم کردیا تھا اور پی ٹی آئی کے ساتھ ملکر اپنے ہی چئیرمین وائس چئیرمین کے خلاف تحریک عدم اعتماد کامیاب کرائی تھی ،اس کا اثر جنرل الیکشن اور ضمنی الیکشن میں بھی برقرار رہا ، تاہم بیرسٹر عقیل ملک ، ملک نصیر الدین نے انھیں ایک مرتبہ پھر ایک پلیٹ فارم پر جمع کرنے کی ان تکھ کاوشوں کیں جو سود مند ثابت ہوئیں اور مسلم لیگ ن کے ناراض اراکین پھر واپس ایک پیج پر آگئے جسکا واویلا پی ٹی آئی نے بھی کیا کیونکہ مسلم لیگ ن کا باغی گروپ پی ٹی آئی کے ساتھ معاہدہ کے تحت ان کے ساتھ آیا تھا جس میں بنیادی عنصر آئندہ انتخابات میں چئیرمین کے لئے مسلم لیگ ن باغی گروپ کے شیخ وحید جبکہ وائس چئیرمین پی ٹی آئی سے ہونا تھا ، لیکن یہ تمام معاہدات الیکشن قریب آتے ہی دم توڑ گئے ، ابھی ملک عمر فاروق کس منہ سے پی ٹی آئی کے ساتھ طعنہ زنی کر رہے ہیں جبکہ ان کے ساتھ ملکر اپنے ہی چئیرمین اور وائس چیئر میں کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک کامیاب کرانے میں انکا کلیدی کردار تھا۔جوں جوں الیکشن کا وقت قریب آرہا ہے شطرنج کی چالیں بھی بدلتی جارہی ہے ،پی ٹی آئی کو میدان مارنے کے لئے چار اراکین اور درکار ہیں،کیونکہ تیس کے ہاوس میں وہی جیتے گا جس کے پاس ممبران کی تعداد سولہ ہوگی، اگر پی ٹی آئی تین ممبران توڑنے میں کامیاب ہوتی ہے تو مقابلہ ٹائی پر چلا جائے گا

یہ بھی پڑھیں  شہید جمہوریت محترمہ بے نظیر بھٹو!