شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / پاکستان / دہشتگردی کا الزام، ذیشان کےلواحقین کا تدفین نہ کرنیکااعلان

دہشتگردی کا الزام، ذیشان کےلواحقین کا تدفین نہ کرنیکااعلان

لاہور(پاک نیوز) ساہیوال سانحہ میں سی ٹی ڈی کی کارروائی میں ہلاک ہونے والے شخص ذیشان اہلخانہ نے دہشتگردی کے الزام کی سختی سے نفی کرتے ہوئے کہا ہے کہ 4 ماہ سے تفتیش کی جا رہی تھی تو اسے کیوں نہیں پکڑا؟ساہیوال میں انسداد دہشتگردی ڈیپارٹمنٹ کے اہلکاروں کے ساتھ مبینہ مقابلے میں ہلاک ہونے والے شخص ذیشان کے اہلخانہ نے ملزم پر دہشتگردی کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے صوبائی وزیر راجہ بشارت کے استعفے کا مطالبہ کر دیا ہے۔ذیشان کے بھائی کا میڈیا سے گفتگو میں کہنا تھا کہ دہشت گردوں کے جنازےمیں اتنا ہجوم نہیں ہوتا، میں خود ڈولفن فورس کا اہلکار ہوں، میرا بھائی معصوم تھا، راجہ بشارت کے تمام الزامات جھوٹ پر مبنی ہیں، 4 ماہ سے تفتیش کی جا رہی تھی تو اسے گرفتار کیوں نہیں کیا گیا؟ جب تک میرے بھائی پر الزام ختم نہیں ہوتا، تدفین نہیں کرینگے۔ذیشان کے لواحقین نے فیروزپور روڈ پر دھرنا دے دیا ہے اور کہا ہے کہ جب تک انصاف نہیں ملے گا، احتجاج جاری رکھیں گے، انصاف نہ ملنے تک تدفین نہیں کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں  ایڈز کی بڑھتی ہوئی خطرناک صورتحال لمحہ فکریہ