شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / پاکستان / بلوچستان : آئندہ مالی سال کا چارسو انیس ارب روپے کا بجٹ پیش

بلوچستان : آئندہ مالی سال کا چارسو انیس ارب روپے کا بجٹ پیش

کوئٹہ(پاک نیوز)مالی سال 2019-20 کیلئے 48 ارب روپے خسارے کا بجٹ پیش کردیا گیا آئندہ مالی سال کے بجٹ کا کل ججم بلوچستان کا 419 ارب روپے کا بجٹ اپوزیشن کے چور شرابے میں پیش کردیا گیا حزب اختلاف نے بجٹ کی کاپیاں پھاڑ دیں وزیرخزانہ میر ظہور بلیدی نے بجٹ پیش کیا نے ہونے تین گھنٹے کی تاخیر سے ایوان میں پیش کیا۔ آئندہ مالی سال کے بجٹ  میں ترقیاتی منصوبوں کیلئے 126 ارب، غیر ترقیاتی بجٹ 291 ارب روپے رکھا گیا ہے ۔ تعلیم کیلئے 60 ارب، لا اینڈ آرڈر 44 ارب 70 کروڑ، صحت کے شعبہ میں 26 ارب، پانی کے منصوبوں کیلئے 28 ارب، صنعت اور توانائی کیلئے 19ارب 7 کروڑ روپے رکھے گئے ہیں۔ کھیل، ثقافت و سیاحت کیلئے 3 ارب 60 کروڑ ، لائیواسٹاک اور جنگلات کیلئے 2 ارب 98 کروڑ روپے رکھے گئے ہیں ۔ نئے مالی سال کے بجٹ میں غیر ملکی تعاون سے 7 ارب 56 کروڑروپے کے منصوبے بجٹ کا حصہ ہیں ۔  صوبے کی اپنی آمدنی 34 ارب، وفاق سے محصولات کی مد میں 319 ارب روپے بلوچستان کو ملیں گے ۔وفاق اور صوبے کے کل محصولات میں ملنے والی رقم 358 ارب روپے ہوگی ۔ صوبائی پی ایس ڈی پی 100 ارب 57 کروڑ روپےہے جبکہ وفاقی خصوصی ترقیاتی گرانٹ سے 18 ارب 21 کروڑ روپے کے منصوبے شروع کئے جائیں گے سرکاری ملازمین کی تنخواہیں اور پنشن میں دس فیصد اضافہ ۔پانچ ہزار چار سو پنتالیس نئی اسامیاں پیدا کی جائیں گی صوبے کی قومی شاہراہ ہر اکیس ٹراماسینٹر قائم کرنے کے علاوہ سولہ اضلاع میں ڈاٹیلاسسز مراکز قائم کرنے کا اعلان بھی کیا گیا ہے جلاس میں اپوزیشن نے شدید احتجاج کرنے کے بعد واک آوٹ کیا۔

یہ بھی پڑھیں  داؤدی بوہری جماعت آج عیدالاضحی منارہی ہے