شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / سرائے مغل:ہسپتال میں عملہ اور ادویات کی کمی کی وجہ سے بیماروں کیلیے شفا کی بجائے وبا ل جان بن گیا

سرائے مغل:ہسپتال میں عملہ اور ادویات کی کمی کی وجہ سے بیماروں کیلیے شفا کی بجائے وبا ل جان بن گیا

سرائے مغل (نامہ نگار )سرائے مغل۔سرائے مغل ہسپتال میں عملہ اور ادویات کی کمی کی وجہ سے بیماروں کیلیے شفا کی بجائے وبا ل جان بن گیا۔کروڑوں روپے سے قائم ہسپتال کھنڈرات بن گیا۔سابقہ حکومت کی پالیسیوں سے محکمہ صحت کے ہسپتالوں کا بیڑہ غرق۔موجودہ حکمران ان پالیسیوں کا از سر نو جائزہ لیکر ان میں فوری تبدیلی لائے تاکہ عوام کو صحت وصفائی کی سہولتیں میسر آسکیں۔ تفصیلات کے مطابق۔کروڑوں روپے سے بنایا گیا سرائے مغل ہسپتال کھنڈرات کا نمونہ بن کرسابقہ اور موجودہ حکومت کی گڈ گورنس کا منہ چڑا رہاہیں۔محکمہ صحت کی نااہلی اور غفلت کی وجہ سے رورل ہسپتالوں کی حالت اچھی نہیں۔یہاں ہسپتال میں ڈاکٹروں اور عملہ کی کمی ہے اور جو عملہ یہاں تعینات ہے وہ بھی اکثر غیر حاضر رہتا ہے۔ ساری محنتیں اس وقت ضائع ہو جاتی ہیں جب مریضوں کوہسپتال سے دوائی بھی نہیں ملتی۔سابقہ حکومت نے ہسپتالوں کو ادویات کی سپلائی کا ٹھیکہ اپنی چہیتی کمپنی کو دے رکھا ہے اور جب سے ہسپتالوں کو اس پرائیویٹ کمپنی کے ذریعے ادویات سپلائی کی جاتی ہیں یہ کمپنی ہسپتالوں کو ادویات کی انتہائی کم مقدار سپلائی کر کے حکومت سے اربوں کے بل وصول کر لیتی ہے مگر ہسپتال میں مرہم پٹی اور مریضوں کی ابتدائی طبی امداد کیلیے گولی تک میسر نہیں۔ سرائے مغل ہسپتال کا اللہ ہی حافظ ہے یہاں روزانہ سینکڑوں مریض دور دور سے آتے ہیں مگر ادویات موجود نہ ہونے کی وجہ سے انتہائی ایمر جنسی کی صورت میں بازار سے ادویات خریدنا پڑتی ہیں۔ سماجی رہنماؤں چوہدری رحمت اللہ،احمد جمال ایڈووکیٹ اوردیگر عوامی سماجی حلقوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب اورمحکمہ صحت کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ علاقہ کے اربوں روپے کے ہسپتالوں کی حالت زار کا نوٹس لیکر رورل ہسپتالوں میں ادویات اور عملہ کی کمی کو پورا کیا جائے اور ہسپتال کو ادویات سپلائی کرنے والی پرائیویٹ کمپنی اور غیر حاضر رہنے والے عملہ کاکڑا احتساب کیا جائے اور انتھیزیا لوجسٹ ڈاکٹر فوری تعینات کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں  توانائی کے تمام منصوبے مقررہ وقت پر مکمل کئے جائیں، وزیر اعظم کی ہدایت
error: Content is Protected!!