شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / بھائی پھیرو:لاکھوں کی آبادی کیلیے صرف دو سرکاری پرائمری سکول

بھائی پھیرو:لاکھوں کی آبادی کیلیے صرف دو سرکاری پرائمری سکول

بھائی پھیرو(نامہ نگار)بھائی پھیرو۔لاکھوں کی آبادی کیلیے صرف دو سرکاری پرائمری سکول۔غریب والدین اپنے بچوں کو مہنگے پرائیویٹ سکولوں میں داخل کرانے پر مجبور۔عوامی سماجی حلقوں کا مزید پرائمری سکول بنانے کا مطالبہ۔ تفصیلات کے مطابق بھائی پھیرو اور گردونواح کی لاکھوں کی آبادی کیلیے صرف دو سرکاری پرائمری سکول ہیں جو اس علاقے کی آبادی کی تعلیمی ضروریات پوری کرنے سے قاصر ہیں۔ایک پرائمری سکول ہائی سکول نمبر دو میں قائم ہے جبکہ دوسرا پرائمری سکول کوٹ فضل شاہ میں قائم ہے یہ دو پرائمری سکول اس علاقے کے ہزاروں بچوں کیلیے ناکافی ہیں جس وجہ سے غریب والدین اپنے بچوں کو مہنگے پرائی و یٹ سکولوں میں داخل کرانے پر مجبور ہیں۔اسی طرح بھائی پھیرو شہرمیں واحد گرلز ہائی سکول ہے جس میں پرائمری حصہ بھی ہے یہاں پر پورے شہر اور اردد گرد کے علاقے کی بھی ہزاروں طالبات تعلیم حاصل کرنے آتی ہیں۔ہزاروں طالبات تعلیمی سہولیات کی کمی کی وجہ سے شدید گرمی کی وجہ سے کئی طالبات اکثربے ہوش جاتی ہیں۔سکول میں بھی پانی کا کوئی مناسب انتظام نہیں ہے۔علاقے بھر کی طلبا، سماجی و تاجر تنظیموں کے رہنماوں اسلامی جمعیت طلبا کے رہنما احمد جمال،تاجر رہنما ملک محمد عثمان بوٹا،جماعت اسلامی کے بھائی پھیرو کے امیر مقبول حسین کمبو،سماجی رہنما ملک فریاد اور درجنوں غریب والدین محمداسلم،فقیر محمد وغیرہ نے مطالبہ کیا ہے کہ بھائی پھیرو میں فوری طور پر مزید گرلز اور بوائزپرائمری سکول کھولے جائیں ان رہنماوں نے کہا کہ ہائی سکول نمبر ایک میں کھلی جگہ اور کلاس روم موجود ہیں اگر اس میں فوری طور پر پرائمری سکول کھول دیا جائے تو حکومت کو زیادہ بجٹ بھی خرچ نہیں کرنا پڑے گا۔جب اس سلسلے میں ہائی سکول نمبر ا کے اساتزہ سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ انہیں پرائمری سکول کھولنے پر کوئی اعتراض نہیں کیونکہ ہائی سکول نمبر ایک میں کافی کھلی جگہ موجود ہے۔

یہ بھی پڑھیں  عوام کیلئے تحفہ، بجلی کی قیمتوں میں 3روپے 21پیسے فی یونٹ کمی کاامکان