شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / سرائے مغل: اقتداراور اپوزیشن جماعتوں کو اپنی لڑائیاں ختم کرکے مسئلہ کشمیر پر اتحاد کامظاہرہ کرنا چاہیے۔مقررین

سرائے مغل: اقتداراور اپوزیشن جماعتوں کو اپنی لڑائیاں ختم کرکے مسئلہ کشمیر پر اتحاد کامظاہرہ کرنا چاہیے۔مقررین

سرائے مغل (نامہ نگار )یوم آزادی کے موقع پر سرائے مغل کی مذہبی اور صحافتی تنظیموں کا یوم یکجہتی کشمیر پر اتحاد کا فقید المثال مظاہرہ۔ اقتداراور اپوزیشن جماعتوں کو اپنی لڑائیاں ختم کرکے مسئلہ کشمیر پر اتحاد کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔مقررین کا اجتماعات اور ریلیوں سے خطاب۔تفصیلات کے مطابق یوم آزادی کے موقع پر سرائے مغل کی مذہبی تنظیموں نے یوم یکجہتی کشمیر پر اتحاد کا مظاہرہ کیا اور متحد ہوکر یوم یکجہتی کشمیر منایا سرائے مغل کے نواحی گاوں کچہ پکا میں علاقے بھر کی مزہبی جماعتوں نے متحدہ طور پر یوم آزادی کے موقع پرشہدائے کشمیر کی قربانیوں کو خراج تحسین پیش کیا- جمعیت علماء پاکستان کے راہنماسید ذاکر حسین شاہ،جماعت اسلامی کے راہنماراو اختر علی،جمعیت اہلحدیث کے قاری تاج محمد شاکر،جمعیت العلمائے اسلام کے قاری نور محمد،اسلامی جمعیت طلبا کے عبدالناصر،کسان بورڈ ضلع قصور کے چوہدری ممتاز، اور دیگر نے اپنے اپنے خطابات میں شہدائے پاکستان کی قربانیوں کو زبردست خراج تحسین پیش کرتے نظریہ پاکستان اور دو قومی نظریہ پر روشنی ڈالی اور کہا کہ کشمیریوں سے ر شتہ کیا لا الہ اللہ۔ مقررین نے کہا کہ بھارتی حکومت نے آرٹیکل 370ختم کرکے پاکستانیوں کی غیرت کو للکارا ہے مگر ہم اپنے کشمیری بھائیوں کی کی آزادی کیلئے اپنا تن من دھن سب قربان کردیں گے اگر روس جیسے مضبوط ملک کے ٹکڑے ٹکڑے ہوسکتے ہیں تو پھر ہندوستان کس باغ کی مولی ہے، کشمیری مسلمان 78سال سے اپنی آزادی کی جنگ لڑ رہے ہیں اب وقت آگیا ہے کہ بھارت کو اب اس کی زبان میں مزہ چکھاناہوگا مسئلہ کشمیر حل کئے بغیر برصغیر میں امن و آمان قائم نہیں ہوسکتا اس لئے اسے اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کیا جائے۔دریں اثنا سرائے مغل پریس کلب نے صدر کرامت وٹو اور چئیرمین رانا انتظار کی قیادت میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلیئے ایک ریلی نکالی۔ریلی سے خطاب کرتے سرپرست اعلی حاجی رمضان نے کہا ہم قلم کے ذریے مظلوم کشمیریوں کے لیے جہاد کریں گے۔شرکا نے ہاتھوں میں پاکستان اور کشمیر کے جھنڈے اٹھا رکھے تھے۔

یہ بھی پڑھیں  خان لالا نے لالاکردی

What is your opinion on this news?