شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / بھائی پھیرو:دو سال قبل اغوا ہونے والے تیرہ سالہ بچے کو سرائے مغل پولیس برآمد کرنے میں ناکام

بھائی پھیرو:دو سال قبل اغوا ہونے والے تیرہ سالہ بچے کو سرائے مغل پولیس برآمد کرنے میں ناکام

بھائی پھیرو(نامہ نگار)بھائی پھیرو۔آسماں کھا گیا یا زمین نگل گئی۔دو سال قبل اغوا ہونے والے تیرہ سالہ بچے کو سرائے مغل پولیس برآمد کرنے میں ناکام۔مظلوم ماں اور اسکے خاندان کا پریس کلب سرائے مغل کے باہر احتجاجی مظاہرہ۔ چونیاں کے تین بچوں کی لاشیں ملنے کے بعد ماں کو غشی کے دورے۔بچے کے مظلوم والدین کی وزیر اعلی پنجاب،آئی جی پنجاب اورا علی حکام سے بچہ بازیاب کرانے کا مطالبہ۔خود سوزی کی دھمکی تفصیلات کے مطابق تھانہ سرائے مغل کے گاؤں راکے گھمن کے رہائشی محمد صدیق اور اسکی بیوی زرینہ بی بی اور اسکے خاندان نے پریس کلب کے باہر سرائے مغل پولیس کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا اوردو سال قبل اغوا شدہ بچہ بازیاب نہ کرنے پر سرائے مغل پولیس کے خلاف نعرے بازی کی۔بد نصیب ماں زرینہ بی بی نے صحافیوں کو بتایا کہ میرے تیرہ سالہ بیٹے امیر حمزہ کو ملزمان اصغر علی،نازیہ بی بی،منظوراں بی بی، اور تین کس نامعلوم نے مورخہ 13-09-2017کو گن پوائینٹ پر دن دۂاڑے اغوا کیا اور کیری ڈبہ میں ڈالکر فرار ہوگئے۔بچے کی ماں زرینہ بی بی نے روتے روتے بتایا کہ اس نے تھانہ سرائے مغل میں بچے کے اغوا کی تحریری درخواست دی مگر تھانہ پولیس نے انکی ایک نہ سنی وہ کئی ماہ مقدمہ درج کرانے کیلیے پولیس دفاتر کے درمیان فٹ بال بنی رہی بالآخر اعلی پولیس حکام کی مداخلت پر ساڑھے تین ماہ بعد مورخہ28-12-2019 کو مقدمہ نمبر 447/17 بجرم 365 ت پ درج کیا گیا۔مگر دو سال گزر جانے کے باوجود میرے بچے کو بر آمد نہیں کیا گیا۔اس نے کہا کہ گزشتہ روز چونیاں میں تین بچوں کو اغوا کے بعد قتل کر دیا گیا اور انکی لاشیں ویرانے سے ملیں۔اس واقع کا سن کر میری راتوں کی نیند اڑ چکی ہے کہ میرے بچے کے ساتھ نہ جانے کیا ہوا ہو گا؟وہ کہاں ہو گا؟کس حال میں ہوگا؟بچے کی جدائی میں میری بینائی کھو چکی ہے۔یہ کہ کر بد نصیب ماں اونچی اونچی رونے لگی اور سرائے مغل پولیس کو بد دعائیں دیتے دیتے اس کو غشی کا دورہ پڑا اور وہ بے ہوش ہو گئی۔بچے کے باپ محمد صدیق نے ہچکیاں لیتے کہا کہ میں غریب محنت کش ہوں میرے پاس پولیس کو رشوت دینے کیلیے پیسے نہ ہیں شاید یہی وجہ ہے دو سال گزرجانے کے باوجود میرا بیٹا بھی بازیاب نہ ہوسکا جبکہ اسکو اغوا کرنے والے ملزمان دندناتے پھر رہے ہیں اور مجھے دھمکیاں دیتے ہیں کہ تمھیں عبرت کا نشان بنا دیں گے۔مظلوم خاندان نے مزید کہا کہ اگر ہمیں انصاف نہ ملا اور ہمارا بچہ بازیاب نہ ہوا تو پھر ہمارے جینے کا کیا فائدہ ہم سارا خاندان لاہور جا کر وزیر اعلی ہاوس کے باہر خود سوزی کر لیں گے۔

یہ بھی پڑھیں  ’اب جو بھی حج پر جائے گا ضمانت کےطور پر رقم جمع کروائے گا‘‘ سعودی عرب نے نئی پابندی عائد کر دی

What is your opinion on this news?