شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / پاکستان / انگریزی اردو نظام سے مدارس کو الگ کرنا ناانصافی ہے،عمران خان

انگریزی اردو نظام سے مدارس کو الگ کرنا ناانصافی ہے،عمران خان

اسلام آباد(پاک نیوز) وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ انگریزی اور اردو نظام سے مدارس کو الگ کرنا ناانصافی ہے۔ دینی طلبا کو بھی جدید تعلیم سے بھی آراستہ کیا جائے گا۔وزیراعظم عمران خان نے اسلام آباد میں دینی مدارس کے طلبا کو انعامات تقسیم کئے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ انگریزی اردو نظام سے مدارس کو الگ کرنا ناانصافی ہے، دینی طلبا کو جدید تعلیم سے بھی آراستہ کیا جائے گا، علامہ اقبال نے پہلے مغربی فلسفے کو پڑھا، علامہ اقبال پڑھے لکھے طبقے کو اسلام کی طرف لائے، دینی طلبا کو اقبالیات بھی ضرور پڑھائی جائے۔ تعلیم کے بغیر معاشرہ ترقی نہیں کرسکتا علم طاقت ہے۔ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے سب سے زیادہ زور تعلیم پر دیا۔ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا تھا کہ تعلیم حاصل کرنے کے لیے چین بھی جانا پڑے تو جائیں۔ تعلیم کا مقصد صرف پیسہ کمانا نہیں۔ سات سو سال تک دنیا کے مشہور سائنسدان مسلمان تھے، برصغیر میں بہترین مدارس تھے۔عمران خان کا کہنا تھا کہ انگریزوں نے سوچ سمجھ کر مسلمانوں کی تعلیم کا نظام ختم کیا، انگریز کے تعلیمی نظام نے طبقات پیدا کیے۔ نظام تعلیم ختم ہونے پر مسلمان پیچھے رہ گئے۔ انگریزوں نے دینی مدارس کے فنڈز اپنے تعلیمی نظام پر لگایا۔ مسلمانوں نے تلوار سے نہیں، علم سے ترقی کی۔ تعلیم میں کمی مسلمانوں کے زوال کا باعث بنی۔ دینی تعلیم ہمیں اچھے برے کی تمیز بتاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ترکی، پاکستان اور ملائیشیا کے مشترکہ ٹی وی چینل سے دنیا کو مسلمانوں کا پیغام جائے گا، انگریزی چینل کا مقصدمسلمانوں کا مقصد سامنے لانا ہے۔ انگریزی چینل کے ذریعے مسلمانوں کا تشخص اجاگر کرنے کے لیے فلمیں بنائی جائیں گی۔ ہمارے ہیروز پر فلمیں بنائی جائیں تا کہ بچوں کو اپنے ہیروز کا علم ہو سکے

یہ بھی پڑھیں  کراچی کے ساتھ ساتھ سندھ کے دہی علاقے بھی ترقی کریں گے: نوازشریف

What is your opinion on this news?