تازہ ترینعلاقائی

بھائی پھیرو:انتظامیہ لاک ڈاون پر عمل در آمد میں مصروف،ذخیرہ اندوزوں نے آٹا غائب کرلیا

دوکاندار اپنے من مانی کے ریٹوں سے آٹا فروخت کر رہے ہیں

بھائی پھیرو(نامہ نگار)بھائی پھیرو۔انتظامیہ لاک ڈاون پر عمل در آمد میں مصروف،زخیرہ اندوزوں نے آٹا غائب کرلیا۔ آٹا لینے والوں نے سوشل ڈسٹینس،دفعہ 144اور لاک ڈاون کے حکومتی اقدامات کو ہوا میں اڑا دیا ہے شہریوں کا کہنا ہے کہ،، پیٹ نہ پیاں روٹیاں تے سبھے گلاں کھوٹیاں،،تفصیلات کے مطابق انتظامیہ لاک ڈاون پر عمل درآمد میں مصروف ہے جبکہ ذخیرہ اندوزوں،فلور ملوں اور چکیوں والوں نے آٹے کی قیمتیں بڑھانے کیلیے آٹے کی مصنوعی قلت پیدا کر کے بازار سے آٹا غائب کر دیا ہے۔ بھائی پھیرو شہر کے درجنوں شہریوں نے ضلعی انتظامیہ کاشکوہ کرتے ہوئے کہا کہ شہر کی عام مارکیٹ میں آٹا نایاب ہے دوکاندار اپنے من مانی کے ریٹوں سے آٹا فروخت کر رہے ہیں شہریوں کا کہنا تھا کہ پرائس کنٹرول مجسٹریٹ اپنے گھروں تک محدود ہیں جبکہ اپنے ماتحت ملازمین کو مارکیٹوں میں بھیجتے ہیں جودیہاڑیاں لگا کر غائب ہوجاتے ہیں اور پرچون مافیا ان کو دی گئی دیہاڑی شہریوں سے زیادہ قمیت میں وصول کر رہے ہیں۔ علاوہ ازیں لاک ڈاو ن کے بعد شہر کے مختلف علاقوں میں آٹا اور دیگر اشیائے خردونوش کی مصنوعی قلت پید اکی جانے لگی ہے،شہر بھر میں بیشتر ہول سیلر نے آٹا موجود ہونے کے باوجود سپلائی میں خود ساختہ ریٹ مقر ر کر دیے ہیں عام شہر یوں کو دینے کے بجائے کھانے پینے کی اشیاء کے سرکاری نرخ نامے سے زائد دوکانداروں کو فروخت کرنے پر ترجیح دی جانے لگی ہے،لاک ڈاون کے باعث جہاں پر دیگر مسائل پید ا ہورہے ہیں وہی پر پیسے کے پجاریوں کی جانب سے آٹے سمیت دیگراشیائخردونوش کی خود ساختہ قلت پید ا کرنے کی کوشیش کی جارہی ہے تاکہ کھانے پینے کی بنیادی اشیاء سرکاری نرخ نامے پر فروخت کرنے کی بجائے دوکانداروں کو مہنگے داموں فروخت کرکے زیا دہ منافع حا صل کیا جاسکے،دیگر ہول سیل دوکانوں پر آٹا،گھی چاول،دالیں اور مصالحہ جات تو موجود ہے مگر دوکان مالکان کی جانب سے صارفین کو فروخت کرنے کے لیے خود ساختہریٹ مقر ر کیا ہواہے۔ لاک ڈاؤن کی وجہ سے شہرکے عوام حالات کے رحم و کرم پر ہیں جبکہ شہر کی انتظامیہ صرف فوٹو سیشن اور نوٹیفیکیشن جاری کرنے تک محدود ہیں.ضلعی انتظامیہ نے لاک ڈاون کے دوران 2 وقت کے کھانے کیلئے ترسنے والے عوام کو حالات کے رحم و کرم پر چھوڑتے ہوئے روپوشی اختیار کر لی ہے جو وفاقی، صوبائی حکومت سمیت وزارت داخلہ کیلئے بھی کسی لمحہ فکریہ سے کم نہیں۔ نواحی علاقوں میں آٹے کا 20 کلو پیک 12 سے 1400 روپے میں فروخت ہو رہا ہے کورونا جیسے موذی وہاء سے بچنے کیلئے حکومت پنجاب نے صوبہ بھر میں اقدامات کا سلسلہ جاری رکھے ہوئی اور اس حوالے لاک ڈا?ن بھی جاری ہے اس کا فائدہ ذخیرہ اندوزوں اور گراں فروشوں نے اٹھانا شروع کرد یا ہے، کئی علاقوں میں آٹا نہیں مل رہا اگر مل رہا ہے تو زیادہ قیمت پر مل رہا ہے، گزشتہ روز مارکیٹوں میں جانیو الے شہریوں کو آٹا نہیں ملا اگر کہیں سے ملا بھی ہے تو ضلعی انتظامیہ کی جانب سے مقرر کی گئی قیمت سے زیادہ پر ملا ہے،کچھ چیزیں تو دوکانداروں نے غائب ہی کر دی ہیں، اس حوالے سے دوکانداروں کا کہنا تھا آٹا ملوں سے نہیں مل رہا اور نہ ہی ہول سیل والے دے رہے ہیں وہ کہتے ہیں کہ ہمیں بھی آٹا نہیں مل رہا ملے گا تو پہنچ جائے گا، بھوک کے مارے شہریوں نے ارباب اختیار سے اپیل کی وہ اس طر ف توجہ دیں اور اس سارے صورت حال کا نوٹس لیں۔جگہ جگہ شہریوں کی لمبی قظاریں آٹے کی دونوں کے باہر نظر آتی ہیں اور آٹا لینے والوں نے سوشل ڈسٹینس،دفعہ 144اور لاک ڈاون کے حکومتی اقدامات کو ہوا میں اڑا دیا ہے شہریوں کا کہنا ہے کہ،، پیٹ نہ پیاں روٹیاں تے سبھے گلاں کھوٹیاں،،

یہ بھی پڑھیے :

What is your opinion on this news?

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker