پاکستانتازہ ترین

صوبہ پنجاب: سحری کے اوقات میں اشیائے ضروریہ کی دکانیں کھولنے کا فیصلہ

لاہور(پاک نیوز) پنجاب حکومت نے رمضان المبارک کے دوران سحری کے وقت دودھ، دہی اور ایسی دیگر دکانیں کھلی رکھنے کا فیصلہ کیا ہے تاہم ہوٹل اور ریسٹورنٹ سحری اور افطاری کے دوران بھی بند رہیں گے۔ عثمان بزدار کہتے ہیں کہ شٹر ڈاؤن کرکے کاروبار کرنے کی کسی صورت اجازت نہیں دیں گے۔تفصیل کے مطاب کابینہ کمیٹی برائے کورونا کا وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدار کے زیر صدارت اجلاس ہوا جس میں رمضان المبارک کے دوران لاک ڈاؤن کے حوالے سے مختلف امور کا جائزہ لیا گیا۔اجلاس میں فیصلے کئے گئے کہ سحری کے وقت دودھ، دہی اور ایسی دیگر دکانیں کھلی رکھی جائیں گی تاہم ہوٹل اور ریسٹورنٹ سحری اور افطاری کے دوران بھی بند رہیں گے۔وزیراعلیٰ پنجاب کا کہنا تھا کہ نماز اور تراویح کی ادائیگی کے لئے 20 نکاتی اعلامیہ پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے گا۔ ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے والی انڈسٹریز کے خلاف کارروائی ہوگی۔وزیراعلیٰ پنجاب نے کورونا ٹیسٹ میں اضافے کیلئے مزید 4 لیب کے قیام کی منظوری دی اور کہا کہ پہلے مرحلے میں سیالکوٹ اور سرگودھا میں نئی لیب بنائی جائیں گی جبکہ دوسرے مرحلے میں رحیم یار خان اور گجرات میں نئی لیب بنیں گی۔سردار عثمان بزدار نے بتایا کہ پنجاب میں 2 لیب کی اپ گریڈیشن جبکہ 3 نئی لیب تیار ہو چکی ہیں۔ صوبہ میں روزانہ کی بنیاد پر ٹیسٹنگ کی صلاحیت 4500 تک پہنچ چکی ہے۔ پنجاب میں اب تک 64 ہزار سے زائد ٹیسٹ کئے جا چکے ہیں اور اب تک 216 علاقوں کا لاک ڈاؤن کیا گیا ہے۔اجلاس کے شرکا کو سمارٹ لاک ڈاؤن کے حوالے سے بریفنگ بھی دی گئی۔ رمضان المبارک کے دوران انڈسٹریل یونٹس کو مرحلہ وار کھولنے بارے امور پر بھی غور جبکہ ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکل سٹاف کو حفاظتی سامان کی فراہمی کا بھی جائزہ لیا گیا

یہ بھی پڑھیں  وزیراعلیٰ پنجاب کانوشہرہ میں دوبہنوں کے قتل کانوٹس،ملزمان کی فوری گرفتاری کاحکم

یہ بھی پڑھیے :

What is your opinion on this news?

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker