تازہ ترینعلاقائی

بھائی پھیرو: نامعلوم چور لاکھوں روپے کے مویشی چوری کرکے فرار

بھائی پھیرو(نامہ نگار) بھائی پھیرو۔تھانہ صدر بھائی پھیرو کے علاقہ میں نامعلوم چور دو وارداتوں میں سابق پولیس ملازم سمیت دو کاشتکاروں کے لاکھوں روپے کے پانچ مویشی چوری کرکے فرار۔مدعی چار دن سے مقدمہ درج کرانے کیلیے دھکے کھاتے رہے مگر پولیس نے چوری کے شواہد غائب کرکے چوروں کی طرفداری کا حق ادا کر دیا۔مویشی چوری کے بڑھتے واقعات پر کاشتکاروں میں خوف و ہراس۔پولیس چوری اور ڈکیتی کے مقدامات درج نہ کرکے ڈاکووں کی طرفداری کرتی ہے۔انجمن انسداد چوری و ڈکیتی کی طرف سے احتجاج کی دھمکی۔تفصیلات کے مطابق نواحی گاوں کامونگل کے کاشتکار گلزار شاہ کی حویلی مویشیاں سے گزشتہ رات نامعلوم چور ایک قیمتی بھینسا کل مالیتی 90000روپے کا چوری کر کے فرار ہو گئے۔مدعی نے کھوجی منگوا کر چوروں کے پاوں کے نشانات محفوظ کر لیے اور اسی دن واقع کی تحریری درخواست تھانہ صدر بھائی پھیرو کے ون ڈیسک میں جمع کرادی اور تھانے سے چوروں کے پاوں کے نشانات کو محفوظ کرنے کا مطابلبہ کیا مگر تین روز گزر جانے کے باوجود پولیس کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی اور پولیس نے چوری کے شواہد محفوظ کرنے کی زحمت نہیں کی اور نہ ہی تاحال مقدمہ کی ایف آئیء آر درج کی ہے۔اسی رات چوری کی دوسری واردات میں نامعلوم چور منواحی گاوں میگہ موڑ کے کا شتکار سابق پولیس ملازم مرزا رستم بیگ کی حویلی سے چار قیمتی بکریاں مالیتی ایک لاکھ روپے کی چوری کر کے فرار ہو گئے۔تھانہ صدر بھائی پھیرو نے اپنے پیٹی بند بھائی کا مقدمہ درج کرنے کی بجائے چوروں کے قدموں کے نشانات محفوظ نہیں کیے۔تھانہ صدر بھائی پھیرو کے علاقہ میں مویشی چوری کے بڑھتے واقعات پر کاشتکاروں میں خوف و ہراس پھیل چکا ہے مگر پولیس خاموش تماشائی بنی اپنے پیٹی بند مظلوم مدعیوں کی مدد کرنے کی بجائے چوروں کی ساتھی بن کر چوروں کی مددگار بن چکی ہے۔ انجمن انسداد چوری اور دیگرکسان تنظیموں نے تھانہ صدر میں چوری اور ڈکیتی کے مقدمات درج نہ کرنے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اعلی پولیس حکام سے تحفظ فراہم کرنے کی اپیل کی ہے۔

یہ بھی پڑھیے :

What is your opinion on this news?

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker