تازہ ترینعلاقائی

15اگست سے تعلیمی ادارے کھولے جائیں، کاشف مرزا

مرادراس کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے تعلیم کا بیڑہ غرق ہورہا ہے، پروفیسر عدنان فیصل

لاہور(پریس ریلیز)آل پاکستان پرائیویٹ سکولز فیڈریشن کی ملک بھر سے300 سے زائدرجسٹرڈپرائیویٹ سکولزایسوسی ایشنز،مدارس،پیف،پیما،فنی تعلیمی اداروں واکیڈمیز کےمشترکہ اعلامیہ کے مطابق تعلیمی ادارے14 ستمبر تک بند رکھنےکےفیصلے کومسترد کر کےاسکولز مدارس دینیہ کی طرح اتحادی تنظیموں کےساتھ ملکر 15 اگست کواز خود کھول دیں گے۔آل پاکستان پرائیویٹ سکولز فیڈریشن کے صدرکاشف مرزا کی کال پرآج بروزمنگل ملک بھر میں پرائیویٹ سکولزتنظیمیں  ساڑھے سات کروڑ پاکستانی بچوں کے آئینی تعلیمی حقوق کی خاطر”پرامن احتجاجی پریس کانفرنسز کےذریعے 15اگست کوسکولزکھولنے کےلائحہ عمل بارے آگاہی دینگی۔کاشف مرزانےچیف جسٹس پاکستان،آرمی چیف،وزیر اعظم، وزرااعلی، گورنرز سے اپیل کی ہے کہ15اگست سے ایس او پیزکےتحت دیگر شعبہ جات کی طرح باقاعدہ طورسکولز کھولےجائیں۔ گیلپ سروےمطابق74%والدین کا سکولز کھولنے کامطالبہ کیا ہے۔ ڈبلیوایچ او کی36لاکھ بچوں میں سےصرف ایک کےمتاثر ہونےکےخدشہ بارے مثبت ایڈوائزری ،مدارس کے ملک بھر کامیاب تجربہ کی روشنی میں حکومت اسکولز15اگست سے کھولنے کی توثیق کرے۔ 7.5کروڑ پاکستانی بچےاپنے آئینی حق سےمحروم ہیں،جن میں50 فیصد سے زائد تعداد لڑکیوں کی ہے۔تعلیمی نقصان کاازالہ ناممکن،تعلیم ہر بچے کاحق اور25-Aریاست کا آئینی فریضہ ہے۔4نجی سکولز،پیف وپیما،دیگرتعلیمی اداروں واکیڈمیز کا معاشی قتل کیا جارہا ہے،تعلیمی اداروں کی بندش ے50%تعلیمی ادارے مکمل بنداور10لاکھ لوگ بے روزگار ہوجائینگے۔ حکومت شعبہ تعلیم کو تباہ کر رہی ہے،چائلڈلیبر رجحان میں خطرناک اضافہ ہواہے۔امیروں کی اولاد کیلیےگھر میں ٹیوٹر اورعام انسان کا بچہ تعلیم سے محروم کیوں؟آن لائن تعلیم اور تعلیم گھر ٹی وی اک فلاپ ڈرامہ ہے۔ کرونا سے شدیدمتاثرممالک میں تعلیمی ادارے کھلےہیں،چین کے صوبےووہان، برازیل،سپین، انگلینڈ،انڈیا، ایران، بنگلہ دیش، سری لنکا سمیت امریکہ، روس، ڈنمارک،فرانس،سوئٹزرلینڈ، آسٹریا، آسٹریلیا، نیوزی لینڈ،جرمنی،جاپان، کوریا، سعودی عرب،اسرائیل، ہانگ کانگ وغیرہ شامل ہیں،تو پاکستانی بچےتعلیم سے محروم کیوں؟سکولز کی ٹائمنگ صبح 7 تا10اور2شفٹ میں فیز وائز سماجی فاصلے کو برقرار رکھ کے کلاسز جاری رکھی جا سکتی ہیں۔ٹیچرزتنخواہیں اور90فیصد اسکولزعمارتیں کے کرائے فکسُ ہیں۔وزیراعظم ٹیچرز کیلیے ’’تعلیمی ریلیف پیکیج‘‘کااعلان کریں۔ بورڈز45لاکھ طلباسے وصول شدہ25ارب روپے واپس کریں ۔حکومت سندھ اورپنجاب کا فیس میں 20%کمی کا آرڈیننس آئین کےآرٹیکل 18,8،5,4,3, 25 (1)،37اور38 سےمتصادم،امتیازی وغیر قانونی ہے۔ انسانیت کے جذبہ اور ملک بھرکے مستحق طلبا کے لیے کرونا ایجوکیشنل ریلیف فنڈقائم کیا،وزیر اعظم پاکستان و وزراءاعلی کوملک بھر کے2لاکھ پرائیویٹ سکولزآئسولیشن سینٹرزاورقرنطینہ سنٹرزاور 15 لاکھ ٹیچرز بطوروالیئنٹیرز پیشکش بھی کی گئی۔خودکشی کرنے والےٹیچرزاوردیگرکی موت اور پنجاب بھر کی
تعلیمی بدانتظامی کےذمےداروزیر تعلیم پنجاب مراد راس سمیت دیگر تعلیم دشمن وزراتعلیم کوفوری بر طرف کیا جائے۔ اے پی پی آئی کے چئیرمین پروفیسر عدنان فیصل نے کہا کہ مراد راس کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے تعلیمی نظام کا بیڑہ غرق ہورہا ہے۔ حکومت جب ہر چیز کھول رہی ہے تو اسکولز کو بھی کھول دینا چاہیے