تازہ ترینعلاقائی

سنجھورو میں قلتِ آب،شہری بوند بوند کو ترس گئے ببب

downloadسنجھورو(نامہ نگار) شہر میں TMAانتظامیہ کی لا پرواہی اور غفلت کی وجہ سے رمضان المبارک کے بابرکت مہینے میں پینے کے پانی کی شدید قلت ہے عوام روزے کی حالت میں دور دراز کے علاقوں سے پانی لانے پر مجبور ہو گئے ہیں ۔پانی کی قلت کی وجہ سے مساجد میں بھی نمازیوں اور اعتکاف میں روزہ داروں کو بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔TMAانتظامیہ کی لا پرواہی اور کرپشن کی وجہ سے سنجھورو شہر کی واٹر سپلائی اسکیم کی تالابوں میں بھل صفائی نہ کرانے اور ٹینڈرز کی رقوم مبینہ طور پر ٹھیکداروں کو بغیر کام کئے جاری کر دی گئی جس کے باعث پینے کے پانی کی تالابوں میں پانی ذخیرہ کرنے کی گنجائش ختم ہو گئی ہے اور ان تالابوں میں پانی جمع نہیں ہو پاتا لہذہٰ آئے دن پانی کی کمی رہتی ہے۔دو سال قبل 6کروڑ کی لاگت سے تعمیر ہونے والا فلٹر پلانٹ بھی TMAانتظامیہ کی عدم توجہ اور فلٹر کی جالی عرصہ دراز سے تبدیل نہ کرنے اور کیمکل نہ ڈالنے کی وجہ سے تباہی کے دھانے پر پہنچ گیا ہے۔سنجھورو شہر میں زیر زمین پانی کڑوا ہونے کی وجہ سے پبلک ہیلتھ کی جانب سے کڑوے پانی کو میٹھا کرنے کے لئے مزکورہ پلانٹ لگایا گیا تھا جو کہ میونسپل انتظامیہ کی نا اہلی کی وجہ سے تباہ ہو گیا ہے اور کڑوا پانی فراہم کر رہا ہے جس کی وجہ سے پیٹ ،دل اور جگر کی بیماریاں بڑھنے کا خدشہ ہو گیا ہے۔ دوسری جانب جب واٹرسپلائی پمپ آپریٹر سے رابطہ کیا گیا تو بتایا گیا کہ واٹر سپلائی اسکیم میں فنی خرابی کے باعث پانی کی سپلائی متاثرہو رہی ہے متعلقہ افسران کی مطلع کیا گیا ہے مگر فنڈ نہ ہونے کی وجہ سے مرمت کاکام نہ ہو سکا ہے جبکہ باخبر زرائع سے معلوم ہوا ہے کہ گذشتہ ماہ مبیہ طور پر جعلی ووچرز کی مدد سے 50 لاکھ روپے پیٹرول،ڈیزل اور دیگر اخراجات کی مد میں بل پاس کر کے TMAاکاؤنٹ سے نکالے گئے ہیں جبکہ چند ہزار کی مرت کے لئے TMA انتظامیہ کے پاس رقوم نہیں ہیں۔سنجھورو کی عوام اور سماجی حلقوں نے DCسانگھڑ اور حکامِ بالا سے اپیل کی ہے کہ سنجھورو واٹر سپلائی اسکیم کی تالابوں کی بھل صفائی کرائی جائے اور فلٹر پلانٹ کی مرمت کر کے مضر صحت پانی کی فراہمی بند کرائی جائے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button