پاکستانتازہ ترین

سرکاری اداروں میں بھرتیوں پرپابندی برقراررہے گی۔ چیف الیکشن کمیشن

election commissionاسلام آباد(بیوروچیف) الیکشن کمیشن نے سرکاری بھرتیوں پر پابندی ہٹانے سے متعلق حکومتی درخواست مسترد کر دی۔ صرف آئینی اداروں کو بھرتیوں کی اجازت ہوگی۔ ترقیاتی فنڈز بھی دوسری جگہ منتقل نہیں ہو سکیں گے۔ الیکشن کمیشن نے گزشتہ ماہ ایک حکمنامے کے ذریعے سرکاری بھرتیوں پر پابندی لگا دی تھی۔ حکومت نے وفاقی وزیر قانون فاروق ایچ نائیک کے خط کے ذریعے الیکشن کمیشن سے سرکاری بھرتیوں پر پابندی ہٹانے کی درخواست کی تھی۔ تین روز کے غوروخوص کے بعد الیکشن کمیشن نے پابندی برقرار رکھنے کا فیصلہ سنا دیا۔ الیکشن کمیشن نے بھرتیوں پر پابندی برقرار رکھنے کا فیصلہ آئین کے آرٹیکل 218 کی شق 3 کے تحت کیا۔ پابندی کا اطلاق وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے زیر انتظام تمام محکموں پر ہوگا۔ صرف آئینی ادارے پابندی سے مستثنی ہوں گے۔ ترجمان کے مطابق، 31 اگست 2012 تک مشتہر کی گئی آسامیوں پر بھرتی کا عمل جاری رہے گا، تمام بھرتیاں اہلیت کی بنیاد پر اور متعلقہ قواعد و ضوابط کے تحت کی جائیں گی۔ بعض محکموں کی پابندی سے متعلق درخواستوں پر علیحدہ علیحدہ غور ہوگا۔
ترجمان کا کہنا ہے  ترقیاتی منصوبوں پر بلاتعطل کام جاری رہے گا مگرکسی ترقیاتی منصوبے کے فنڈز دوسری جگہ منتقل نہیں کئے جا سکیں گے۔ حساس نوعیت کے منصوبوں کے فنڈز کی منتقلی کا فیصلہ الیکشن کمیشن کرے گا۔

یہ بھی پڑھیں  مصطفی کمال

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker