تازہ ترینعلاقائی

بھائی پھیروسمیت پنجاب بھر میں ڈینگی اور کروناکے بڑھتے ہوئے کیسز تشویشناک ہیں۔حاجی رمضان

بھائی پھیرو(نامہ نگار)بھائی پھیروسمیت پنجاب بھر میں ڈینگی اور کرونا کے بڑھتے کیسز تشویشناک ہیں۔مانگا ہسپتال کی تین لیڈی ڈاکٹرز کا ایک ساتھ کرونا میں مبتلا ہونا تشویشناک ہے۔باقاعدگی سے ڈینگی سپرے کو یقینی بنایا جائے اور فوری فیلڈ ہسپتال قائم کیے جائیں۔حکومت کرونا اور ڈینگی کی بجاے ینگ ڈاکٹرز سے لڑنے میں مصروف ہے۔جماعت اسلامی ضلع قصور کے سیکرٹری اطلاعات حاجی محمد رمضان نے ایک ہنگامی پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ بھائی پھیروسمیت پنجاب بھر میں ڈینگی اور کروناکے بڑھتے ہوئے کیسز تشویشناک ہیں۔ گزشتہ 24گھنٹوں کے دوران لاہور میں 126اور پنجاب بھر میں 165نئے مریض سامنے آئے ہیں۔بھائی پھیرو سمیت ضلع قصور اور گردونواح میں بھی ڈینگی اور کرونا کے بڑھتے کیسوں نے عوام میں تشویش کی لہر دوڑا دی ہے۔گزشتہ روز نواحی قصبہ مانگا ہسپتال کی تین لیڈی ڈاکٹروں ڈاکٹر شرمین،ڈاکٹر ماہا اور ڈاکٹر ماریہ کے ایک ساتھ کرونا میں مبتلا ہونے کی خبروں سے عوام میں خوف و ہراس پھیل چکا ہے مگر انتظامیہ اور محکمہ ہیلتھ خاموش تماشائی بنا بیٹھا ہے۔ پنجاب میں اس وقت 319مریض زیر علاج ہیں۔ حکومتی اقدامات کہیں نظر نہیں آتے۔ عوام کو بے یارومددگار چھوڑ دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کرونا اور ڈینگی وائرس نے تباہ کاریاں مچا رکھی ہیں۔ عوام میں ا س حوالے سے شعور بیدار کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ 2011میں ڈینگی کے باعث ہزاروں افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ اس وائرس کی روک تھام کے لیے ایمرجنسی بنیادوں پر کام کیا جائے۔ عوام پریشان ہیں اور صوبائی وزیر صحت کہیں نظر نہیں آرہیں۔ محکمہ صحت وبا کی روک تھام کے لیے سنجیدگی کا مظاہرہ کرے۔ انہوں نے کہا کہ فوری طور پر ڈینگی اور کروناکے بڑھتے ہوئے کیسز کو مد نظر رکھتے ہوئے فیلڈ ہسپتال قائم کیے جائیں اور اس ضمن میں کسی قسم کی کوتاہی نہ برتی جائے۔ ہسپتالوں میں ڈینگی اور کرونا وارڈز قائم کرنا ہونگے۔ بہت سارے ایسے کیسز بھی سامنے آرہے ہیں جہاں مناسب اقدامات نہ ہونے کی وجہ سے ہسپتال خود وبا کے پھلاؤ کا ذریعہ بنے۔حاجی محمد رمضان نے اس حوالے سے مزید کہا کہ ہر علاقے، گلی، محلے میں ڈینگی سپرے کو یقینی بنایا جائے۔بھائی پھیرو اور ارد گرد کے دیہات میں بہت ساری آبادیاں ایسی ہیں جہاں ہر وقت سیوریج کا گندہ پانی کھڑا رہتا ہے اورگندگی کے باعث مچھروں کی افزائش ہوتی رہتی ہے مگر وہ آبادیاں ابھی تک سپرے سے محروم ہیں۔ ڈینگی کے بچاؤ کے لیے باقاعدگی سے سپرے کا اہتمام ہونا چاہیے مگر کتنی بد قسمتی کی بات ہے کہ حکومت ڈینگی اور کرونا سے لڑنے کی بجائے ینگ ڈاکٹرز سے لڑرہی ہے۔ اسلام آباد میں ینگ ڈاکٹرز کے احتجاج کے دوران پولیس کا تشدد ریاستی اداروں کی ناکامی ہے۔انہوں نے نئے اے سی پتوکی اور نئے ڈی سی قصور سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر عوام کی صحت کو بچانے کیلیے فوری اقدامات کریں۔ حکمران ہر محاذ پر بری طرح ناکام ثابت ہوئے ہیں

یہ بھی پڑھیں  کیمیکل کے8 ڈرموں کو حب منتقل کرنے کی کوشش کو ناکام ،دو افراد گرفتار

یہ بھی پڑھیے :

جواب دیں

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker