تازہ ترینعلاقائی

بھائی پھیرو:نجی سی این جی پمپ کی کروڑوں کی گیس چوری کرتے ٹاسک فورس نے رنگے ہاتھوں پکڑ لیا

بھائی پھیرو(نامہ نگار)بھائی پھیرو۔نجی سی این جی پمپ کی کروڑوں کی گیس چوری کرتے ٹاسک فورس نے رنگے ہاتھوں پکڑ لیا۔ٹیم پر با اثرگیس چوروں نے اندھا دھند فائرنگ کرکے ایک سرکاری ملازم کو شدید زخمی کر دیا اور قبضہ میں لیے گئے چوری کے ثبوت کا سامان چھین کر فرار۔ چوروں پر علیحدہ علیحدہ مقدمات درج کرکے گیس چوروں کے خلاف کاروائی شروع کردی۔تفصیلات کے مطابق شکایات ملنے پر محکمہ سوئی گیس کی پی اینڈ ڈی ٹاسک فورس کے سینئیر انجینئیر فرحان اشفاق چیمہ ایگزیکٹو انجینئیر ابوذر بھٹی،،ڈپٹی فورمین راجہ مؑظم،سینئیر سپروائزر افتخار،،سینئیر انجینئیر راجہ مستنصر،یوسف ذاکر،فٹڑ کاشف سعید،پر مشتمل ٹیم نے بھائی پھیرو بائی پاس پر اے ون سی این جی پر اچانک چھاپہ مارا اور دیکھا کہ مالک امتیاز احمد اور اسکے چھ سات نامعلوم ساتھیوں نے مقناچیس لگا کر سوئی گین کا میٹر بند کر رکھا تھا اور کمپریسر کے زریعے گیس سلنڈروں میں بھر رہے تھے۔موقع پر ایک بائیس ویلر ٹرالر نمبر GLTB-4992 پر 270 سلنڈر گیس بھر کر لاد رکھے تھے۔گیس چوری پکڑ کر ٹیم نے گیس میٹر منقطع کرکے بطور ثبوت قبضہ میں لے لیے اور پولیس کو بلا کر ٹرالر اور گیس سلنڈر مقامی پولیس کے حوالے کر دیے۔جب گیس چوری پکڑنے والی ٹیم تھوڑی دور گئی تو مالک امتیاز احمد اور اسکے چھ سات مسلح ساتھی پیچھا کرتے ٹیم کے پیچھے آگئے اور آتے ہی اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی،جس سے ملازمین نے چھپ کر اور بھاگ کر اپنی جانیں بچائیں،فائرنگکے نتیجے میں محکمہ سوئی گیس کا فٹر کاشف سعید فائر لگنے سے شدید زخمی ہو گیا اور محکمہ سوئی گیس کی تین گاڑیاں چھلنی چھلنی ہو کر تباہ ہو گئیں۔حملہ آوروں نے محکمہ کی ٹیم سے سے گیس میٹر اور دیگر سامان گن پوائینٹ پر چھینا اور دھمکیاں دیتے فائرنگ کرتے فرار ہو گئے۔ پولیس نے فوری چور پر تھانہ سٹی بھائی پھیرو اور تھانہ مانگا منڈی میں سی این جی اے ون کے مالک امتیاز احمد اور اس کے سات ساتھیوں کے خلاف دو مقدمات درج کرکے تفتیش شروع کر دی۔یہ امر قابل زکر ہے کہ اس علاقے میں اربوں کی گیس چوری روز کا معمول بن چکی ہے اور جعلی میٹر لگا کر،اور ڈائرکٹ پائپ لگا کر گیس چوری کے واقعات روز کا معمول بن چکے ہیں اس گیس چوری میں محکمہ سوئی گیس کے ملازمین بھی ملوث ہیں اور کئی دفعہ ان کے خلاف مقدمات بھی درج ہوئے مگر با اثر گیس چور اور محکمہ کے ملازمین ملی بھگت سے بچ نکلتے ہیں۔عوامی سماجی حلقوں نے وزیر اعظم عمران خان اور چیف جسٹس سپریم کورٹ سے اپیل کی ہے کہ وہ بھائی پھیرو اور گردونواح میں گیس چوری کے درج مقدمات کی تحقیقات عدلیہ سے کروائیں اور از خود نوٹس لیکر با اثر گیس چوروں کے خلاف سخت ترین کاروائی کریں۔عوامی سماجی حلقوں نے کہا ہے کہ اگر صرف اس علاقے میں گیس چوری روک دی جائے تو ملک بھر میں گیس کی لوڈ شیڈنگ ختم ہو سکتی ہے۔ایک تبصرہ نگار تنویر کا کہنا ہے کہ ایک طرف عوام کو روٹی پکانے کیلیے بھی گیس نہیں ملتی،صنعتیں بند پڑی ہیں جب کہ دوسری طرف گیس چور سر عام گیس چوری کرکے عوام کا حق مار رہے ہیں اور ملک اور عوام کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔عوامی سماجی حلقوں کا کہنا ہے کہ عوام کو تو بجلی اور گیس ملتی نہیں جبکہ دوسری طرف با اثر افراد حکومت کی چھتری تلے کروڑوں روپے کی گیس اور بجلی چوری کر رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button