پاکستانتازہ ترین

وزیراعظم نے تحریک اعتماد پر ووٹنگ کا اعلان کردیا

اسلام آباد(پاک نیوز)وزیراعظم عمران خان نے کہاہے کہ اتوار کو عدم اعتماد پر ووٹنگ ہو گی ملک کی قسمت کا فیصلہ ہو گا،لوگوں نے کہا آپ مستعفی ہو جائیں میں آخری گیند تک مقابلہ کرتا ہوں کبھی زندگی میں ہار نہیں مانی ،ووٹ کا جو بھی نتیجہ ہوگا میں اور تگڑا ہو کر سامنے آﺅں گا،انہوں نے کہاکہ ضمیروں اور ملک کی خود مختاری کا سوداد ہو رہا ہے، ضمیر کا سودا کرنے والوں پر ہمیشہ کیلئے مہر لگنے والی ہے،وزیراعظم کا کہناتھا کہ نہ لوگ آپ کو معاف کریں گے نہ بھولیں گے ،بیرون ملک سازش اور یہاں کے لوگوں سے ملکرآزادخارجہ پالیسی کی حکومت گرانے کی کوشش کی گئی ،قوم سے وعدہ ہے جب مجھے میں خون ہے میں اس سے مقابلہ کروں گا،کوئی غلطی فہمی میں نہ رہے کہ عمران خان چپ کرکے بیٹھ جائے گا۔وزیراعظم عمران خان نے قوم سے براہ راست خطاب کرتے ہوئے کہاکہ آج اہم بات کرنی ہے جو ملک کے مستقبل کیلئے ہے،پاکستان اس وقت ایک فیصلہ کن موڑ پر ہے،ہمارے سامنے دو راستے ہیں ،فیصلہ کرنا ہے ہمیں کونسالینا ہے ۔ان کاکہناتھا کہ قائداعظم بہت بڑے سیاستدان تھے،قوم کو بتانا چاہتا ہوں میری طرح کا آدمی سیاست میں کیوں آیا،دوسرے سیاستدانوں کو دیکھیں سیاست سے پہلے کوئی نہیں جانتا تھا،خوش قسمت ہوں، اللہ کا شکر ادا کرتاہوں مجھے اس نے سب کچھ دیا تھا،مجھے جنتی ضرورت تھی اتنا پیسہ تھا، میرے پاس سب کچھ تھا،اللہ نے مجھے سب کچھ دیا جس پر شکرگزار ہوں ،ان کا کہناتھا کہ پاکستان کی پہلی جنریشن تھا جوآزاد پاکستان میں پیدا ہوا تھا، میرے والدین نے پاکستان کی تحریک میں حصہ لیاتھا،میرے والدین ہمیشہ کہتے تھے بڑے خوش قسمت ہو آزاد ملک میں پیدا ہوئے ،انگریز کی غلامی خوددار لوگوں کو بہت بری لگتی تھی،خوددار آزاد قوم کی نشانی ہوتی ہے،پاکستان حاصل کرنے کے بڑے مقاصد تھے،ہم نے ایک آزاد فلاحی ریاست بننا تھا،خودداری میرے منشور میں شامل تھی،14 سال میرا مذاق اڑایا گیا لیکن میں سیاست میں رہا،بہت لوگوں نے کہا عمران خان آپ کو سیاست کی کیا ضرورت تھی،سیاست میں آنے کا مقصد ملک کو فلاحی ریاست بنانا تھا۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کا مقصد بڑا عظیم تھا،ہمیں اسلامی فلاحی ریاست بننا تھا،وزیراعظم نے کہاکہ 25 سال سے کہہ رہا ہوں نہ خود جھکوں گا نہ قوم کو جھکنے دوں گا،بار بار ڈو مور کہا گیامجھے طالبان خان کہا گیا،انہوں نے کہاکہ سب سے بڑی غلطی مشرف نے کی،جو دہشتگردی کیخلاف جنگ میں اتحادی بن گئے ،میں نے ہر جگہ کہا کہ ہماراجنگ سے کوئی لینا دینا نہیں تھا،ڈرون حملوں میں بے قصور لوگ مارے گئے، امریکا کیساتھ اکٹھی جنگ لڑ رہے تھے،2 سال بعدامریکا ہم پر پابندی لگا دیتا ہے،قربانیاں دینے کا کیا کریڈٹ ملا؟۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button