پاکستانتازہ ترین

لوڈشیڈنگ کے بحران کے فوری خاتمہ ناممکن ،نوازشریف کا قوم سے خطاب

nawazاسلام آباد(پاک نیوز) وزیراعظم پاکستان میاں محمد نوازشریف نے قوم سے اپنے خطاب میں لوڈشیڈنگ کے بحران کے فوری خاتمے کو ناممکن قراردے دیا۔۔وزیراعظم کہتے ہیں کہ لوڈشیڈنگ کے حل میں پانچ سال لگیں گے. حکومت سنبھالنے کے ڈھائی ماہ بعد قوم سے اپہنے پہلے خطاب میں نوازشریف نے بجلی اورگیس چوری کے خلاف سخت گیر مؤقف بھی اختیارکیا، بھارت کو خیرسگالی کا پیغام بھی دیا اور دہشت گردی کے خاتمے کاعزم کیا۔ ساتھ ہی انہوں نے خون بہانے والے انتہاپسندوں کو مذاکرات کی دعوت بھی دی۔ وزیراعظم نوازشریف نے کہ عوام نے مجھ اعتماد کااظہار کیاہے ،اعتماد کرنے پر قوم کاشکریہ ادا کرتا ہوں۔14سال بعد عوام سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نوازشریف نے کہاکہ ایک لمحہ بھی ایسا نہیں گزرا جب چیلنجز سے نمٹنے کا نہ سوچا ہو،صورتحال کا تقاضا تھاکہ گزشتہ 14سال کے زخموں کا جائزہ لیا جائے اورعلاج کیا جائے۔ایسا وقت نہیں گزرا دہشت گردی ،لوڈشیڈنگ کے خاتمے کیلیے سرجوڑکرنہ بیٹھے ہو،بدترین لوڈشیڈنگ کی وجہ سے ہماری معیشت مفلوج ہوکررہ گئی،کرپشن،نااہلی اورناقص فیصلوں نیملک کی بنیادیں ہلاکررکھ دیں،پاکستان اسٹیل،واپڈا،پی آئی ایسمیت ہرادارہ بدحالی کاشکارہے،قومی ادارے ملک کوسالانہ تقریبا500ارب روپے کانقصان پہنچارہے ہیں،اتناپیساضائع نہیں کیاہوتاتوکراچی سے لاہورتک موٹروے بن سکتی تھی،ایک نئی پی آئی اے اور اسٹیل مل بھی بن سکتی تھی،یونیورسٹیاں اوراسپتال بنائے جاسکتے تھے،جون1999میں حکومت کے خاتمے کے وقت قرضے3000ارب روپے تھے،گزشتہ14سال میں قرضے14ہزار500ارب روپے ہوچکے ہیں،اس قرض کی بھاری قسطیں اداکرنے کیلیے مزیدقرض لینے پرمجبورہیں،مزیدقرضہ نہ لیاتوملک خدانخواستہ دیوالیہ ہوسکتاہے،بدعنوامی اوربے حسی کی مثالیں پیش کرناچاہتاہوں،نندی پورمیں2007میں چینی کمپنی کے تعاون سے بجلی کے کارخانے کاآغازہوا،اس منصوبے پراربوں روپے خرچ کیے گئے،چندافرادکی ہوس نے اس منصوبے کاراستہ روک لیا،اورمنصوبے کی مشینری کراچی پورٹ پرپڑے پڑے تباہ ہوگئی،بغیروقت ضائع کیے اِس منصوبے پرکام کادوبارہ آغازکیا،نندی پورمنصوبے کی لاگت 59ارب روپے تک پہنچ چکی ہے،منصوبے کی تکمیل میں 6سال کی تاخیربھی ہوجائے گی،نیلم ،جہلم منصوبے کو6سال میں مکمل ہوناتھالیکن بدانتظامی اورنااہلی میں جھونک دیاگیا،85ارب کے منصوبے پر274ارب روپے خرچ کرناپڑیں گے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker