پاکستانتازہ ترین

ملک بھر میں یوم عاشور عقیدت و احترام سے منا یا گیا

لاہور(ڈیسک رپورٹر) ملک بھر میں دس محرم کے جلوس روایتی راستوں سے ہوتے ہوئے اپنی اختتامی منزل تک پہنچ گئے ۔ اس موقع پر سیکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کئے گئے تھے ۔ امام عالی مقام حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ اور شہدائے کربلا کی یاد میں یوم عاشور مذہبی عقیدت و احترام کے ساتھ منایا جا رہا ہے، کراچی کے نشتر پارک سے نکلنے والا مرکزی جلوس حسینیہ ایرانیاں پہنچ گیاہے جہاں نماز مغرب کے بعد شام غریباں کی مجلس ہوگی۔کراچی میں یوم عاشور کا مرکزی جلوس نشتر پارک سے برآمد ہوا۔ جو صدر، ایمپریس مارکیٹ،جامع کلاتھ ، بولٹن مارکیٹ سے ہوتاہوا اپنی منزل کی طرف گامزن رہا ۔ جلوس میں لاکھوں کی تعداد میں عزادار شریک ہیں، جلوس کے شرکا نے ایم اے جناح روڈ پر امام بارگاہ علی رضا کے سامنے نماز ظہرین اداکی۔ جس کے بعد جلوس پھر اپنی منزل کی طرف گامزن ہوگیا۔ جلوس کی گزرگاہوں میں واقع بلند عمارتوں پر پولیس اور رینجرز کے اہلکاروں کو تعینات کیا گیا ہے جلوس کے داخلی راستوں پر واک تھرو گیٹ نصب کئے گئے۔ لاہور میں نثار حویلی سے نکلنے والا یوم عاشور کا مرکزی جلوس اپنے روایتی راستوں سے انتہائی سیکورٹی کے حصار میں رواں دواں رہنے کے بعد جلوس مغرب کے بعد کربلا گامے شاہ پہنچ کر اختتام پذیر ہوگیا۔لاہور کی تاریخی نثار حویلی سے نکلنے والے شبیہ ذوالجناح کے مرکزی جلوس کے شرکاءنے نماز فجر کوتوالی اور نماز ظہرین سنہری مسجد رنگ محل پر ادا کی ،جلوس کے راستوں پر دودھ کی سبیلوں اور لنگر حسینیہ کا اہتمام کیا گیا جبکہ جلو س کی سیکیورٹی کے لیے آٹھ ہزار پولیس اہلکاراپنے فرائض ادا کر رہے تھے ۔ جلوس کے راستوں کی بلند و بالا عمارتوں پر دوسو سےزائد اسنیئپررتعینات کیے گئے۔سندھ میں کے مختلف شہروں میں دس محرم الحرام کے ماتمی جلوس عقیدت واحترام سے برآمد ہوئے۔حیدرآ باد میں ماتمی جلوس قدم گاہ مولا علی سے برآمد ہواجس میں شرکت کیلئے بڑی تعداد میں لوگ اندرون سندھ سے آئے تھے۔ سکھر میں دس محرم ا لحرام کا ماتمی جلوس شکار پور روڈ سے برآمد ہوا۔عزادار سینہ کوبی کرتے رہے۔ خیر پور میں ماتمی جلوس میں دوگروپوں میں تصادم کے نتیجے میں ایک شخص جاں بحق اور چار افراد زخمی ہوگئے۔ پولیس نے سات افراد کو حراست میں لیا۔میر پور خاص میں مرکزی جلوس اسٹیشن چوک سے برآمد ہوا۔ ٹنڈو محمد خان میں مرکزی جلوس امام بارگاہ حسینی سے برآمد ہوا۔ بلوچستان اور خیبر پختونخواہ میں بھی عاشورہ انتہائی عقیدت و احترام سے منایا گیا، اس موقع پر عزاداران حسین نے فلسفہ حسینیت کو زندہ رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا۔ یوم عاشورہ کے موقع پر کوئٹہ سے مرکزی جلوس علمدارپنجابی امام بارگاہ سے برآمد ہوا، جلوس اپنے مقررہ راستوں سے گذرتا ہوا اختتام پذیر ہوا، اس موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے ڈاکٹروں کی ہڑتال کے باعث سرکاری اسپتالوں میں ایمرجنسی سروسز یوم عاشور پر بھی بند رہی، یوم عاشور کے موقع پر سبی شہر کو مکمل طور پر سیل کردیا گیا جبکہ شہر بھر میں سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے تھے، دکی میں محرم الحرام کے دوران سیکیورٹی خدشات کے پیش نظر ستائیس گھنٹے گزرنے کے باوجود موبائل سروس بند رہی۔خیبر پختونخواہ میں بھی یوم عاشور کے موقع پر جلوس نکالے گئے اور مجالس کا اہتمام کیا، عزاداران نے شہدائے کربلا کی یاد میں عزاداری کی، ذاکرین نے فلسفہ حسینیت پر روشنی ڈالی، صوبائی دارالحکومت پشاور میں اندرون شہر کی مختلف امام بارگاہوں سے یوم عاشور کے جلوس کی برآمدگی کے لیے سیکورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے۔ امام بارگاہ سید علی شاہ، امام بارگاہ حیدر شاہ سمیت دیگرامام بارگاہوں سے جلوس برآمد ہوئے جو اپنے روایتی راستوں سے گذرتے ہوئے اختتام پذیر ہوئے۔ یوم عاشور کا پہلا جلوس امام بارگاہ سید فضل علی شاہ رضوی سے ہوتا ہوا پیپل منڈی پہنچ گیا جبکہ مرکزی جلوس دو بجے امام بارگاہ عالم شاہ کوچی بازار سے روانہ ہوا۔ہری پور میں یوم عاشور کے موقع پر بجلی کے بدترین بریک ڈاؤن کے باعث مجالس میں بجلی کی عدم فراہمی پر شدید بدنظمی دیکھی گئی، بجلی کی عدم فراہمی پر مجالس کے شرکا نے شدید احتجاج کیا، لکی مروت میں یوم عاشور کا مرکزی جلوس محلہ سیداں سے برآمد ہوا، جلوس روایتی راستوں سے ہوتا ہوا بخاری شاہ قبرستان میں اختتام پزیر ہوا، ڈی آئی خان میں عاشورہ کے جلوس امام بارگاہوں سے بر ۤآمد ہوئے، جلوسوں کے لئے سخت حفاظتی انتظامات کئے گئے تھے جبکہ جلوسوں کی فضائی نگرانی بھی کی جا رہی تھی۔

یہ بھی پڑھیں  رائے ونڈ بدبو کا گھر

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker