تازہ ترینعلاقائی

اوکاڑہ:پولیس نےطالب علم بازیاب کراکے اغواء برائے تاوان کے تین لوگوں کو تاوان کی رقم سمیت گرفتارکرلیا

okaraاوکاڑہ (مظہر رشید سے) دسٹرکٹ پولیس آفیسر اوکاڑہ کی ہدایات پر اوکاڑہ پولیس نے نرسری کا طالب علم بازیاب کراکے اغواء برائے تاوان کے تین مرکزی کرداروں کو تاوان کی رقم سمیت گرفتارکرلیا ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر اوکاڑہ بابربخت قریشی نے ایک پریس بریفنگ کے دوران انکشاف کیا کہ ڈیرھ ماہ قبل تھانہ راوی کے علاقہ منگن کے رہائشی لیاقت علی کے معصوم بچے و نرسری کے طالب علم چھ سالہ نزاکت علی کو اغواء کرلیا گیا تھا جس کے عوض ملزمان نے اٹھارہ لاکھ روپے تاوان طلب کیا چونکہ والدین اتنی رقم اکھٹی کرنے کی طاقت نہیں رکھتے تھے جس پر انہوں نے اپنی اراضی تین کنال فروخت کرکے رقم اغواء کاروں کو دینے کیلئے جارہے تھے کہ ڈی ایس پی صدر اوکاڑہ شعیب چیمہ،انسپکٹرایس ایچ اوتھانہ راوی ملک محمداسلم اور ڈی پی او کی تشکیل کردہ خصوصی ٹیم نے انتہائی راز داری اور ڈرامائی انداز میں اغواء برائے تاوان کے مرکزی اغواکاروں نواب علی ،منظور احمد اورغلام محی الدین کو ضلع فیصل آباد کے علاقہ چک نمبر253مذہبی والا ڈجکوٹ سے گرفتار کر لیا اور بچے نزاکت علی کو بازیاب کراکے ورثاء کے حوالہ کردیاڈی پی او نے بتایا کہ نزاکت علی کے اغواء کا مقدمہ نمبری264/13مورخہ دس اگست بجرم 365اے تھانہ راوی میں درج کرکے ایف آئی آر کو سیل کردیا گیا تھا تاکہ پولیس کے اقدامات کا کسی کو بھی علم نہ ہو سکے اس بناء پر ہی پولیس ٹیم کو بچہ زندہ بازیاب کرانے میں کامیابی ہوئی دریں اثناء عوامی حلقوں نے اس کامیاب آپریشن پر ڈی پی او اوکاڑہ بابر بخت قریشی اور انکی ٹیم کو خراج تحسین پیش کیا ہے قبل ازیں اغواء برائے تاوان کے چار مقدمات میں بچوں کو بازیاب کرایا گیا اور ملزمان کو جیل بھیج دیا گیا تھا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button