تازہ ترینعلاقائی

پتوکی:گورنمنٹ ہائی سکول کے سینئر ہیڈ ماسٹر کا طلباء سے جبری مشقت کروانا معمول بن گیا

downloadپتوکی(ندیم رضا خاں سے) گورنمنٹ ہائی سکول کے سینئر ہیڈ ماسٹر کا طلباء سے جبری مشقت کروانا معمول بن گیا ۔شہریوں کا پریس کلب کے سامنے شدید احتجاج ۔ غیر حاضر ٹیچر سے ہیڈ ماسٹر نذرانے لیکر ٹیچروں کی حاضریاں لگانے لگا ۔ تفصیلات کے مطابق گورنمنٹ ہائی سکول پتوکی میں ہیڈ ماسٹر رانا محمد اقبال نے طلباء کو پڑھانے کی بجائے کمروں میں سفیدی ، پینٹ اور صفائیاں کروانے لگا ۔ ہیڈ ماسٹر رانا اقبال کی تعیناتی سے اب تک طلباء کے نتائج متاثر کن ہیں جو سٹوڈنٹ پاس ہوتے ہیں وہ ذاتی محنت اور پرائیوٹ اکیڈمیوں میں بھاری فیسیں ادا کر کے پاس ہورہے ہیں۔گورنمنٹ ہائی سکول کی بے ضابطگیوں کا سپیشل آڈٹ فرض شناس اور ایماندار آفیسر سے کروائی جائے ۔معصوم طلباء اور درجہ چہارم کے ملازمین سے جبری مشقت کروانا اس کا معمول بن گیا ہے۔جس سے بچوں کی تعلیمی سرگرمیاں متاثر ہورہی ہیں ۔سکول کونسل اور فروغ تعلیم فنڈ میں فرضی پرچیاں چسپاں کر کے کرپشن کا بازار گرم کر رکھا ہے۔ صدر پریس کلب شاہد قیوم ٹیپو کی قیاد ت میں اصغر ساقی ، شاہد جاوید، اظہر الحق اور دیگر میڈیا کی ٹیم نے چھاپہ مارا تو طلباء سے جبری مشقت لی جارہی تھی ہیڈ ماسٹر رانا اقبال نے آن کیمرہ ورژن دینے سے انکار کر دیا ۔سماجی کارکن محمد امین نمبردار اور دیگر شہریوں نے صحافیوں کو بتلایا کہ ہائی سکول میں ٹیچر کی تعداد تقریباً60کے قریب ہے مگر حاضر صرف 37سے 40ہوتے ہیں بقیہ ٹیچر ہیڈ ماسٹر رانا اقبال کونذرانے دیکر سکو ل سے غائب رہتے ہیں اور ہیڈ ماسٹر ان کی فرضی حاضریاں خود لگاتا ہے ۔ سکول میں بچے بے یار و مدد گار ٹولیوں کی شکل میں بیٹھے رہتے ہیں سکو ل میں بچوں کی تعداد تقریباً 1500کے لگ بھگ ہے جن کا مستقبل تباہ و برباد ہورہا ہے ۔ سکول کے کا م کاج اور صفائی ہیڈ ماسٹر بچوں سے کرواتا ہے اور انکے لاکھوں کے بل نکلوا کر خود ہڑپ کر جاتا ہے ملک امین نمبردار اور بچوں کے والدین نے اعلیٰ حکام سے پرزور اپیل کی ہے کہ ایسے کرپٹ ہیڈماسٹر کو فوری طور پر فارغ کر کے کوئی ایماندار ہیڈماسٹر تعینات کیا جائے تاکہ بچوں کا مستقبل تاریک ہونے سے بچ سکے اس بابت جب سکول کے ہیڈ ماسٹر رانا اقبال سے بات کی گئی تو اس نے کہا کہ بیٹھ کر بھائیوں کی طرح بات کو نمٹا لیتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button