پاکستانتازہ ترین

پشاور ہائیکورٹ نے تمام موبائل کمپنیوں کے اعلیٰ حکام کے وارنٹ گرفتاری جاری کردیئے

simپشاور(نمائندہ خصوصی)پشاور ہائی کورٹ نے غیر قانونی سموں کی فروخت کے حوالے سے کیس میں تمام موبائل نیٹ ورک کمپنیوں کے جی ایمز، چیف ایگزیکٹوز اور ڈائریکٹرز کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے۔ پشاور ہائیکورٹ میں غیر قانونی سموں کی فروخت کے حوالے سے کیس کی سماعت چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ جسٹس دوست محمد اور جسٹس ملک منظور پر مشتمل دو رکنی بینچ نے کی۔ گزشتہ سماعت کے دوران عدالت نے موبائل فون کمپنیوں کے اعلیٰ افسران کو طلب کیا تھا تاہم وہ پیش نہ ہوئے جس پر چیف جسٹس نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے تمام موبائلز کمپنیوں کے جی ایمز، چیف ایگزیکٹوز اور ڈائریکٹرز کے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیئے اور چیف سیکرٹری، ہوم سیکرٹری، ڈی جی نیب، ڈی جی ایف آئی کو ہدایت کی ہے کہ موبائل کمپنیوں کے متعلقہ حکام کو گرفتار کرکے آئندہ سماعت کے دوران عدالت میں پیش کیا جائے۔ چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ کا یہ بھی کہنا تھا کہ غیر ملکی ٹیکس چور اور سرمایہ کار نہیں چاہئیں۔ مردان، صوابی اور چارسدہ سے افغان سموں کے سگنل کیوں آ رہے ہیں؟ افغان سمیں ملک دشمن عناصر استعمال کر رہے ہیں جس سے دہشت گردی میں اضافہ ہورہا ہے، ملک میں قانون کی پاسداری نہیں کی جارہی غیر قانونی سمیں افریقی ممالک میں بھی نہیں ملتیں۔ چیف جسٹس نے ہدایت کی کہ پاکستانی حدود میں افغان سموں کے سگنل کے مکمل خاتمے کےلئے اقدامات کئے جائیں اور ہمیں سخت ایکشن لینے پر مجبور نہ کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button