پاکستانتازہ ترین

بجلی کی قیمتوں میں اضافے پرنظرثانی، سپریم کورٹ کی حکومت کو جمعہ تک کی مہلت

supreem courtاسلام آباد(بیوروچیف)سپریم کورٹ نے بجلی کی قیمتوں میں حالیہ اضافے پر نظرثانی کے لیے حکومت کو جمعہ تک کی مہلت دے دی ہے۔ چیف جسٹس کا کہنا ہے کہ آئین و قانون کے مطابق کام کیا جائے گا تو عدالت مداخلت نہیں کرے گی۔ چیف جسٹس پاکستان جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے بجلی کی لوڈشیڈنگ سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت کی۔ وفاقی وزیر پانی و بجلی خواجہ آصف نے عدالت میں بتایا کہ حکومت بجلی کی قیمتوں میں حالیہ اضافے پر نظرثانی کو تیار ہے۔ اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ نوٹیفیکیشن واپس لیں، عدالت مداخلت کرے گی تو اچھا نہیں لگے گا۔ عدالت نے اس پر جمعے تک نظرثانی کرکے تحریری بیان جمع کرانے کی ہدایت کی۔ اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ بجلی کی تقسیم کار9 کمپنیوں نے نیپرا سے سفارش کی تھی کہ بجلی کے نرخ بڑھائے جائیں۔ خواجہ آصف نے بتایا کہ پیپکو میں 101فیڈرز ایسے ہیں جہاں صرف تین فیصد لوگ بل دیتے ہیں، پیپکو میں 57سے 80فیصد تک نادہندہ ہیں۔ جس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ آپ اس کو پکڑیں جو کہتا ہے وہ قانون سے بڑا ہے، عوام کی اکثریت ایماندار ہے، لائنوں میں لگ کر بل جمع کراتی ہے۔ چیف جسٹس نے خواجہ آصف سے مخاطب ہوکرکہاکہ آپ وفاقی حکومت ہیں، آرٹیکل 148کی ذمہ داری جانتے ہیں، صوبائی حکومتوں کی مدد کریں۔ کراچی میں وفاقی حکومت نے مدد کی تو وہاں بہتری آنا شروع ہوگئی ہے، شاید اب وفاقی حکومت کو بلوچستان میں بھی مدد دینا پڑے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button