تازہ ترینعلاقائی

ضلع قصور کے اساتذہ نے تعلیمی اداروں میں بازؤوں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر’’سلام ٹیچرز ڈے‘‘منایا

kasurپتوکی(ندیم رضا خاں سے) ضلع قصور کے اساتذہ نے تعلیمی اداروں میں بازؤوں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر’’سلام ٹیچرز ڈے‘‘منایا۔ نسلوں کے مستقبل کا نگہبان اور علم کا مینار’’ استاد‘‘ احترام اور اعلیٰ مقام کا حقدار ہے۔اسی لئے آج اساتذہ کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرنے کے لئے دنیا بھر میں سلام ٹیچرز ڈے منایا جارہا ہے ۔مقام افسوس ہے کہ پاکستان میں استاد کو وہ مقام نہیں دیاجا رہا جو اس کے شایانِ شان ہے۔ان خیالات کا اظہارمتحدہ محاذ اساتذہ کے راہنما اور پنجاب ایجوکیٹرز ایسوسی ایشن ضلع قصور کے صدرمحمد یوسف ندیم نے مختلف سکولوں میں اساتذہ کے اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان بالخصوص پنجاب میں الٹی گنگا بہہ رہی ہے ۔حکومت پنجاب’’ تعلیم دشمن‘‘ اور’’ اساتذہ کش‘‘ پالیسیاں بنا کرغریبوں پر تعلیم کے دروازے بنداوراساتذہ کے وقار اور عظمت کو خاک میں ملانے کے لئے کوششیں کررہی ہے۔ تاجروں کی حکومت ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی کے ذریعے تعلیم اداروں کواپنی فیکٹریوں میں تبدیل کرکے بیرونی طاقتوں کے ایجنڈے کی تکمیل کرنا چاہتی ہے ۔ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی تعلیم دشمن اقدام ہے پنجاب بھر کے اساتذہ یہ کام کبھی نہیں ہونے دیں گے۔یہی وجہ ہے کہ حکومت کی غلط پالیسیوں کے خلاف آج پنجاب بھر کے اساتذہ ’’سلام ٹیچرز ڈے‘‘ کو ’’یومِ سیاہ‘‘ کے طور پر منا رہے ہیں جو کہ گڈ گورننس کا راگ الاپنے اور تعلیم کے متعلق بلند بانگ دعوے کرنے والوں کی نفی ہے۔انہوں نے کہا کہ مار نہیں پیار کی حکومتی پالیسی نے اساتذہ کا احترام ختم کردیا ہے۔ یہی وجہ ہے اب طلبہ محنت نہیں کرتے اور خراب رزلٹ آنے پر ذمہ دار اساتذہ کو ٹھہرایا جاتا ہے اور انہیں شوکاز نوٹس جاری کئے جاتے ہیں اساتذہ حکومت سے پوچھتے ہیں کیا چوری ڈکیتی ختم ہو گئی اور پولیس نے سب مجرموں کو پکڑ لیا ؟ کیا عدالتوں نے سب کو انصاف دے دیا ؟کیا انٹی کرپشن والوں نے کرپشن ختم کردی؟سارا الزام ٹیچرپر کیوں اور ٹیچر ہی کیوں نشانے پردوسرے کیوں نہیں؟ اگر استاد نہیں پڑھا رہا تو ملک بھر میں انجینئرز، سائنسدان ، ڈاکٹرز،بڑے بڑے افسران کہاں سے پیدا ہورہے ہیں؟انہوں نے کہا کہ اساتذہ کی تمام پریشانیوں کو دور کرنا اور انکے تمام مسائل کا حل ہی سلام ٹیچر ڈے کا تقاضا ہے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button