پاکستانتازہ ترین

راولپنڈی: 30 سکولوں کا پینے کا پانی مضر صحت ہے،گورنرپنجاب

sarwarراولپنڈی (ڈپٹی بیورو چیف )گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے انکشاف کیا ہے کہ 30 سکولوں کا پینے کا پانی مضر صحت ہے،جس سے تعلیم حاصل کرنے والے بچوں میں ہیپاٹائٹس پھیل رہا ہے،ہم این جی اوز اور مخیر حضرات کے تعاون سے ایک طالبعلم کو روزانہ ایک روپے کا پینے کا صاف پانی فراہم کرسکتے ہیں۔یہ بات انہوں نے نجی ٹی وی کے ایک پروگرام میں کہی،گورنر پنجاب نے کہا کہ ہم نے جن 30 سکولوں کا پینے کا پانی لیبارٹری ٹیسٹ کرایا ہے ،ان سکولوں میں گورنر ہاؤس کے افسران اور ملازمین کے بچے اور بچیاں بھی تعلیم حاصل کررہے ہیں اگر بچے کی صحت ٹھیک نہیں ہوگی تو وہ تعلیم کیسے حاصل کرے گا۔باخبر ذرائع کے مطابق سکولوں میں بچوں کو مضر صحت پانی کی فراہمی کی اطلاعات کے بعد پنجاب حکومت نے لاہور اور راولپنڈی کے تمام سرکاری سکولوں میں پینے کے صاف پانی کا لیبارٹری ٹیسٹ کرانے کا فیصلہ کیا ہے،ایک اطلاع کے مطابق پنجاب کے تمام سرکاری ہسپتالوں میں ڈینگی بخار سے بھی زیادہ ہیپا ٹائٹس کے مریضوں کی تعداد تین گنا زیادہ ہے،جن میں دو سال سے لیکر 16 سال کے بچے بھی شامل ہیں،ذرائع کا کہنا ہے کہ لامحدود وسائل کے باوجود صحت کی سہولتوں کی عدم دستیابی باالخصوص ہیپاٹائٹس اور ڈینگی کیسز کی تعداد میں اضافہ صوبائی وزیر اور متعلقہ حکام کی ناقص کارکردگی کا منہ بولتا ثبوت ہے،جس پر وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے غفلت کے مرتکب اور اموات کے ذمہ داران کا تعین کرنے کی ہدایات جاری کیں ہیں،ذرائع کا کہنا ہے کہ محرم الحرام کے بعد صوبائی وزیر صحت خلیل طاہر سندھو کو ہٹاکر ان کی جگہ سلمان رفیق کوصوبائی وزیر صحت بنایا جاسکتا ہے جبکہ لاہور اور راولپنڈی کے ای ڈی اوز ہیلتھ کو بھی تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker