تازہ ترینعلاقائی

جھنگ:سی این جی سٹیشنز کےبعد پٹرول پمپس بھی بند ۔ عوام کا حکومت سے فوری ایکشن لینے کامطالبہ

cng-stop-22جھنگ ( شفقت سیال سے):ملک میں جاری گیس کے سنگین بحران کے باعث سی این جی سٹیشنز کی بندش کے بعد پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن نے اپنا پرافٹ مارجن بڑھانے کے مطالبہ کے بعد پٹرول پمپس بھی بند کر دیئے ہیں جس کے باعث سی این جی اور پٹرول و ڈیزل پر چلنے والی ہزاروں گاڑیاں اڈوں میں محصور ہو کر رہ گئی ہیں اور لاکھوں مسافروں کو زبردست پریشانی کاسامنا کرنا پڑ رہاہے مگر ارباب اختیار مختلف مافیاز کے سامنے بے بس ہو گئے ہیں نیز عوام نے حکومت سے فوری سخت ایکشن لینے کامطالبہ کیاہے ۔ تفصیلات کے مطابق معلوم ہواہے کہ لاکھوں کی تعداد میں مختلف مکاتب فکر اور پبلک و پرائیویٹ سیکٹر کے افراد کے پاس 800 سے 1300سی سی تک کی چھوٹی گاڑیاں موجود ہیں جن کی اکثریت سی این جی سے منسلک ہے مگر حکومت نے گیس کے بحران کے باعث غیر معینہ مدت کیلئے سی این جی سٹیشن بند کردیئے ہیں جس کے باعث شہریوں کو متبادل انرجی کے طور پر پٹرول پر گاڑیاں چلانا پڑ رہی تھیں مگر پٹرولیم مافیانے پہلے ہی بے تحاشہ نرخوں کے بعد اب اپنا پرافٹ مارجن بڑھوانے کیلئے غیر قانونی طور پر ہڑتال کر دی ہے جس کے باعث ہر قسم کی ٹرانسپورٹ کو پٹرول و ڈیزل کی فراہمی معطل ہو کر رہ گئی ہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ متوسط ، سفید پوش اور درمیانے درجے کے شہری لاکھوں کی تعداد میں موٹر سائیکل کو سواری کے طور پر استعمال کرتے ہیں جنہیں چار روز سے جاری پٹرول پمپس کی ہڑتال کے باعث پٹرول نہ ملنے سے مزید دشواری کاسامنا ہے ۔اسی طرح مختلف شہروں کے درمیان چلنے والی ہزاروں ویگنیں اور بسیں بھی پٹرول و ڈیزل نہ ملنے سے جام ہو کر رہ گئی ہیں ۔ دوسری جانب روزگار ، ملازمت ،تعلیم، غمی و خوشی کے ضمن میں روزانہ ایک شہر سے دوسرے شہر سفر کرنے والے لاکھوں افراد شدید مشکل و پریشانی کاشکار ہو کر رہ گئے ہیں مگر متعلقہ ارباب اختیار کی جانب سے غیر قانونی ہڑتال ختم کروانے کی جانب سنجیدگی سے توجہ نہ دی جا رہی ہے ۔اس پر ستم ظریفی یہ کہ چونکہ اکثر بڑے پٹرول پمپس و سی این جی سٹیشنز اہم سیاسی و انتظامی شخصیات اور بااثر ترین افراد کی ملکیت ہیں لہٰذا کوئی ان پر ہاتھ ڈالنے کی ہمت نہ کر رہاہے۔ عوام الناس نے خادم اعلیٰ پنجاب سمیت دیگر ارباب اختیار سے صورتحال کافوری نوٹس لینے کامطالبہ کیاہے۔

یہ بھی پڑھیں  اداکارہ وینا ملک کی شوہرکے ہمراہ عمران خان سے ملاقات

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker